تبلیغات
پیروان خط ولایت فقیه پاکستان - مطالب اسفند 1394
آقای سید ساجد علی نقوی شروع هی سے ایک متحرک ،محنتی ،زحمت کش، اور مومن مرد ہیں.امام خامنه ای

جنرل راحیل شریف نے مزید 13 دہشتگردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی

سه شنبه 25 اسفند 1394 08:53 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
سپہ سالار نے مزید 13 دہشتگردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی
 
پاک فوج کے سپہ سالار جنرل راحیل شریف نے مزید 13 دہشگردوں کو سزائے موت دینے کی توثیق کردی ہے۔ پاک فوج کے ادارہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے کہا ہے کہ 13 دہشت گردوں کیخلاف مختلف فوجی عدالتوں میں مقدمات چلائے گئے تھے اور الزامات ثابت ہونے پر سزائے موت سنائی گئی۔ آرمی چیف نے 13 دہشت گردوں کو سزائے موت دینے کی باضابطہ توثیق کر دی ہے۔

سزائے موت سنائے جانے والے دہشتگردوں میں اصغر خان، احمد علی اور ہارون رشید، مشتاق احمد، محمد نواز، تاج گل، بخت امیر، عزیز خان، فضل غفار، اصغر خان ولد احمد جان شامل ہیں اور ان کا تعلق کالعدم تنظیم تحریک طالبان سے ہے۔

آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں میں سیدو شریف ایئرپورٹ، نانگا پربت بیس کیمپ میں غیر ملکیوں کو قتل کرنے، سکولز، مسلح افواج، شہریوں کو نشانہ بنانے والے دہشتگرد شامل ہیں۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 25 اسفند 1394 08:54 ب.ظ

شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی کی دورہ پاراچنار کی مختصر رپورٹ

سه شنبه 25 اسفند 1394 08:44 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
Untitled-1
شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے پارا چنار کا ایک تفصیلی دورہ کیا 13مارچ 2016مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ عارف واحدی پاراچنار پہنچے اصوبائی صدر خیبر پختونخواہ علامہ حمید حسین امامی اور کارکنان بھی ہمراہ تھے مجلس علماء شیعہ کے اراکین نے استقبال کیا اور مختلف شخصیات نے وفود کی شکل میں ملاقاتیں کیں اس کے بعد مرکزی انجمنِ حسینیہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کیا اور قائدِ ملت جعفریہ پاکستان آیت اللہ سید ساجد علی نقوی کا پیغام پہنچایا

مرکزی خطیب حسینیہ علامہ فدا حسین مظاہری سے ملاقات کی اور اہم امور پر تبادلہ خیال کیا اس موقع پر علماء کرام کی بڑی تعداد موجود تھی انجمنِ انصار حسین کے دفتر کا دورہ کیا ان کے فلاحی امور کے حوالے سے گفتگو ہوئی مختلف مومنین اور شہداء کے گھروں پر آمد مومنین کی فاتحہ خوانی کی اور تعزیتیں کیں سابق سینیٹر تحریک جعفریہ پاکستان و سرپرست مدرسہ آیت اللہ خامنہ ای علامہ عابد حسین الحسینی سے ملاقات کی بڑے وفد کے ہمراہ جامعہ آیت اللہ خامنہ ای آمد ملکی امور پر تبادلہ خیال کیا

علامہ سید صفدر علی نقوی النجفی مرکزی نائب صدر شیعہ علماء کونسل پاکستان علامہ حامد علی روحانی صوبائی نائب صدر بھی ہمراہ تھے مجلس علماء اہلیبیت اور شیعہ علماء کونسل کے زیر اہتمام ایک بڑے اجتماع سے خطاب کیا اس موقع پر مختلف اداروں کے طالب علم اور علماء کرام موجود تھے علامہ عابد حسین الحسینی  بھی ہمراہ تھے پاراچنار کے صدر علامہ باقر حیدری اور ان کی کابینہ سے ملاقات کی اور تنظیمی امور پر تبادلہ خیال کیا پاراچنار میں موجود تنظیموں اور انجمنوں کے مختلف وفود کی ملاقاتیں ہوئیں اور قائد ملت جعفریہ پاکستان کا پیغام پہنچایا میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو ہوئی اور ملکی مجموعی صورتحال کے حوالے سے تفصیلی تنظیمی پالیسی بیان کی گئی

پیواڑ پہنچنے پر اہل پیواڑ کی جانب سے شاندار استقبال کیا گیا علماء کرام کے بڑے وفد کے ہمراہ شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی ؒ کے مزار پر حاضری دی شہید قائد کی خدمات اور ان کے جانشین علامہ ساجد علی نقوی کی خدمات اور ن کے مشن کے تسلسل کو بیان کیا گیا اور آئندہ بھی ان کے مشن کو آگے بڑھانے کے لئے عہد کیا گیا



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 25 اسفند 1394 08:46 ب.ظ

آزادی کے نام پر کوئی ایسا بل جو اسلام اور شر یعت سے ٹکڑا تا ہوں ہم اُس بل کی حمایت نہیں کریں گے (علامہ ناظر عباس تقوی )

سه شنبه 25 اسفند 1394 08:42 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
12187743_550241318456550_3381994283079152983_n

کراچی(اسٹاف رپورٹر)شیعہ علماء کو نسل صوبہ سندھ کے صدر علامہ سید ناظر عباس تقوی نے صوبائی دفتر میں کارکنان کی فکری نشت سے خطاب کر تے ہوئے کہا ں کہ موجودہ حقوق نسواء بل اسلام اور شر یعت سے متصادم ہے پا کستان ایک اسلامی ملک ہے اور اس ملک کا آئین بھی اسلامی ہے لیکن آزادی کے نام پر کوئی ایسا بل جو اسلام اور شر یعت سے ٹکڑا تا ہوں ہم اُس بل کی حمایت نہیں کریں گے اسلام نے خواتیں کے جو حقوق بیان کئیے ہیں اُس میں جو آزادی خواتیں کو دی گی ہیں اُس میں وسعت پائی جا تی ہیں ماضی کے اندر بھی حقوق نسواء کے نام پر پر ویز مشرف نے جو بل پیش کیا اُس سے معاشرے پر جو بڑے اثرات مرتب ہوئے ہیں اس کی کوئی مثال نہیں ملتی


مغربی سوچ اور فکر رکھنے والے خواتیں کو سنہری باغ دیکھا کر آزادی کے نام پر معاشرے کو غلط راستے پر گامزن کرنا چاہتے ہیں اسلام نے بیوی اور خاوند کے جو حقوق بیان کئیے ہیں اُن کو مدنظر رکھتے ہوئے قا نون سازی کی جائے خواتیں کے حقوق کی بہترین مثال پیغمبر اکرم ﷺکی بیٹی حغرت فاطمہ زہرا کی زندگی تمام عالم اسلام کی خواتیں کے لیے نمو نہ عمل ہے اسلام نے خوا تیں کی تعظیم اور تکریم کا جو عملی نمونہ پیش کیا دور جہالیت سے اُس کا تقابل کیا جا سکتا ہے دور جہالت میں عورت کی کیا حیثیت اور عزت تھی لیکن اسلام نے آنے کے بعد عورت کو عزت اور شرف عطا کیا آج آزادی کے نام پر عورتوں کو اشتہارات کی زینت بنانا اور عورتوں کو اپنے مفادات کے لیے استعمال کر نا یہ مغرب کی سیاست تو ہو سکتی ہیں مگر اسلام کی نہیں




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 25 اسفند 1394 08:44 ب.ظ

ڈاکٹر محمد علی نقوی جیسی سماجی و مذہبی شخصیت جو ہمیشہ قومی قیادت اور علمائے کرام و کارکنان کے سنگ قومی پلیٹ فارم سے مربوط رہی انکی قومی و ملی خدمات ہمیشہ یادرکھی جائیں گی

دوشنبه 17 اسفند 1394 12:07 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
Dr_Muhammad_Ali_Naqvi_Shaheed

شیعہ علماءکونسل پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے کہا ہے کہ تشیع کی پوری تاریخ قربانیوں سے عبارت ہے اور ارض پاک کی تشکیل و تعمیر اور سلامتی و دفاع میں اب تک قربانیوں کا یہ تسلسل جاری ہے۔ڈاکٹر محمد علی نقوی جیسی سماجی و مذہبی شخصیت جو ہمیشہ قومی قیادت اور علمائے کرام و کارکنان کے سنگ قومی پلیٹ فارم سے مربوط رہی انکی قومی و ملی خدمات ہمیشہ یادرکھی جائیں گی اور ان کو یاد کرنے کا سب سے بہترین طریقہ یہ ہے کہ نوجوان ان کے دیئے ہوئے رہنما اصولوں کو مشعل راہ بنائیں‘

انکی 21 ویں برسی کے موقع پر ان کی ملی و قومی خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کا سب سے بہترین طریقہ یہ ہے کہ مذہب و ملت کی خدمت کو اپنا شعار بنایا جائے‘ وحدت و یکجہتی کو فروغ دیا جائے‘ باہمی پیار و محبت اور الفت کو عام کیا جائے اور باہم متحد ہوکر اپنے خلاف ہونے والی سازشوں کو ناکام بنایا جائے۔

علامہ عارف واحدی نے مزید کہا کہ پیغمبر گرامی اور ائمہ اطہار ؑ کی سیرت و تعلیمات کی روشنی میں مظلوم ہونا ہمارے لئے باعث فخر ہے ۔اس ملک کے ذمہ دار‘ مہذب‘ قانو ن پسند شہری ہونے کے ناطے ہم صبر و تحمل کا مظاہرہ کرکے پرامن انداز میں ظلم و بربریت کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرتے چلے آرہے ہیں تاہم اسے ہماری کمزوری ہرگز نہ سمجھا جائے۔

شیعہ علماءکونسل کے مرکزی سیکریٹری جنرل نے کہا ہر سانحہ کے بعد بلند و بانگ دعوے معمول بن چکے ہیں مگر عملاً کچھ نہیں کیا جاتاجب تک دہشتگردوں کے خلاف ٹھوس اقدامات نہیں اُٹھائے جاتے اور دہشتگردی کو جڑ سے ختم نہیں کیا جاتا اس وقت تک عوام کی جان و مال محفوظ نہیں۔ملک میں مساجد و امام بارگاہیں، دفاعی و تعلیمی ادارے، بازار اور گلیاں حتیٰ کہ مسافر بھی محفوظ نہیں۔ علامہ عارف واحدی نے ڈاکٹر محمد علی نقوی اور دیگر شہداءکی بلندی درجات کی دعا کرتے ہوئے کہا کہ شہدا کا خون ضرور رنگ لائے گا اور ہم شہدا کے مشن کو جاری رکھیں گے۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 17 اسفند 1394 12:08 ب.ظ

جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے کارکنوں کی شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی کے مزار پر حاضری ، فاتحہ خوانی، قومی خدمات کو خراج عقیدت

دوشنبه 17 اسفند 1394 12:05 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: جعفریہ اسٹو ڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان ،
dffef79a-26e6-43b3-8330-b58f96a28ca0

لاہور ( ) جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان لاہور ڈویژن کے وفد نے شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی کے مزارعلی رضا آباد پر حاضری دی ، فاتحہ خوانی کی اور ان کی قومی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا۔جے ایس او لاہور ڈویژن کے صدر فخر عباس بٹراور جنرل سیکرٹری سہیل عباس کی سربراہی میں جانے والے وفد میں ڈویژنل کابینہ اور یونٹ صدوjsر شامل تھے۔

جنہوں نے شیعہ علماکونسل کے رہنماوں علامہ حافظ کاظم رضا نقوی اور مولانا نذر عباس ساجدی کی رہنمائی میں شہید کے مزار پر پھولوں کی چادر چڑھائی ۔ اس موقع پرخطاب میں انہوں نے ڈاکٹر محمد علی نقوی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ شہید پاکستان میں امریکہ کی مخالفت کے نشان اور نوجوانوں کی رہنمائی کرنے والے تھے۔ جنہوں نے اپنی زندگی ملت جعفریہ کے وقار کے لئے وقف کررکھی تھی۔ وہ انتھک محنت کے عادی تھے، اسی وجہ سے دشمن کی آنکھوںمیں کھٹکتے بھی تھے۔ انہوں نے ولایت فقیہہ اور انقلاب اسلامی ایران کی پہچان کروانے اور خود کو خط امام سے مربوط کررکھا تھا۔

رہنماوں کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر محمدعلی نقوی اختلاف رائے کو برداشت اور پسند کرتے اور علما میں قدر کی نگاہ سے دیکھے جاتے۔ ڈویژنل صدر فخر عباس کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر محمد علی نقوی پاکستان میں ایسے طالب علم رہنما تھے، جن کے اٹھائے ہوئے اقدامات سے تنظیموں کی تربیت ہوئی، جے ایس او ان کے نقش قدم پر چلتے ہوئے قائد ملت جعفریہ علامہ سید ساجد علی نقوی کے ہاتھ مضبوط کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اتحاد امت کے ساتھ اتحاد بین المومنین بھی ضروری ہے ، جس کے لئے نمائندہ ولی فقیہہ کی شکل میںقیادت موجود ہے۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 17 اسفند 1394 12:06 ب.ظ

اسلام کے نام پربننے والی ریاست میں کوئی غیر اسلامی قانون سازی تسلیم نہیں کرینگے، علامہ عارف واحدی

دوشنبه 17 اسفند 1394 12:02 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
Untitled
 شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے کہاہے کہ پاکستان اسلام کے نام پروجود میں آیا، اسلامی جمہوریہ پاکستان میں کسی قسم کی قانون سازی تسلیم نہیں کرسکتے اورحقوق نسواں بل کے نام پر معاشرے کابہترین خاندانی نظام تباہ کرنے کی سازش کامیاب نہیں ہونے دینگے۔

علامہ عارف حسین واحدی کا کہنا تھاکہ پنجاب اسمبلی کی جانب سے منظور کئے گئے حقوق نسواں بل کا اسلامی نظریاتی کونسل نے بغور اورشق وار جائزہ لے کر جن نکات کی نشاندہی کی اور اسے مسترد کردیا، اس کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔ دوران گفتگو علامہ واحدی کا کہنا تھا کہ پاکستان اسلام کے نام پر معرض وجود میں آیا، اسلامی ملک کہلانے والے اس پاک سرزمین پر کسی قسم کی غیر آئینی و غیر اسلامی قانون سازی تسلیم نہیں کرسکتے ، جب 73ء کے متفقہ آئین میں واضح کردیاگیاہے کہ پاکستان میں کوئی بھی قانون سازی غیر اسلامی نہیں ہوسکتی توپھر کیوں ایسے غیر اسلامی قوانین بنائے جارہے ہیں؟

علامہ عارف واحدی کا کہنا تھا کہ اسلام نے خواتین کو جتنے حقوق دیئے وہ کسی بھی اور تہذیب ، معاشرے یا مذہب میں نہیں ہیں۔ تعلیم سے لے کر خاندانی اور پیشہ وارانہ سرگرمیو ں تک کی شریعت میں واضح ہدایات موجود ہیں لیکن افسوس حقوق نسوا ں کے نام پر معاشرے کا بہترین خاندانی نظام تباہ کرنے کی سازش کی جارہی ہے جسے ہم کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دینگے ۔اسلام نے مرد و خواتین کو یکساں حقوق فراہم کئے ہیں لیکن جس طرح ایک سازش کے تحت معاشرے میں دانستہ اور غیر دانستہ طور پر بگاڑ پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے وہ انتہائی تشویش ناک امر ہے جو ناقابل برداشت ہے



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 17 اسفند 1394 12:04 ب.ظ

عظیم الشان علماء و ذاکرین استحکام پاکستان کنونشن سے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ عارف واحدی کا خطاب

دوشنبه 17 اسفند 1394 12:00 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
12718072_804666662998763_5111342889421779500_n

کراچی شیعہ علما کونسل پاکستان صوبہ سندھ کی جانب سے نشتر پارک میں عظیم و شان علماء و ذاکرین استحکام پاکستان کنونشن منقد کیا گیا جس میں ہزاروں علما و ذاکرین نے شرکت کی شیعہ علما کونسل پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے خطاب کرتے ہوۓ کہا کے عظیم و شان کنونشن میں ہزاروں علما کی شرکت اس بات کی دلیل ہے کے وہ قائد ملت جعفریہ پر بھر پور عتماد کرتے ہیں انشااللہ ہر صوبے میں اس طرح کی کانفرنس منعقد کی جاییگی، ہم نے ہر دور میں سینہ پر گولیاں کھائی ہے مگر دشمن کے سامنے سر نہیں جھکایا الله کا فضل ہے اس نے ہمیں ایسی با بصیرت قیادت اتا فرمائی جسکی وجہ سے تشیع پاکستان سورخرو ہے آپکی قیادت نے ہر میدان میں تکفری دشمن کو شکست سے دو چار کیا ، آپکی قیادت کی حکمت کی وجہ سے پاکستان کی تمام دینی جماتیں ایک جگا یکجا ہے اور تکفیری گندگی کے ڈھیر پر کھڑے ہے




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 17 اسفند 1394 12:01 ب.ظ

عظیم الشان علماء و ذاکرین کنونشن سے نمائندہ ولی فقیہ قائد ملت جعفریہ آیت اللہ سید ساجد علی نقوی کا خطاب

دوشنبه 17 اسفند 1394 11:57 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: نماینده ولی فقیه علامه ساجد نقوی ،
10367191_804687769663319_8119894715463759073_n
 قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے سینکڑوں ‘ علماء و ذاکرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں دہشتگردی کے واقعات کا تسلسل اور دہشتگردانہ کارروائیاں ملک کو انارکی کی طرف لے جانے اور ملک کی جڑوں کو کھوکھلاکرنے کی سازش ہے لہذا اس مائنڈ سیٹ کو جڑوں سے اکھاڑ نے کی ضرورت ہے ۔ شدت پسندوں اور انکے سرپرستوں و سہولت کاروں کے خاتمے کے بغیر ملک میں امن ممکن نہیں ۔

انہوں نے کہا کہ یہ اُمت، اُمت واحدہ ہے۔ اتحاد امت قرآنی و نبوی فریضہ ہے جسے ہم مسلسل انجام دے رہے ہیں اور تمام تر مشکلات و مسائل کے باوجود اس فریضے کی ادائیگی سے قطعاً غافل نہیں۔ ہمار ا یہ امتیاز ہے کہ ہم ملک میں اتحاد کے داعی نہیں بلکہ بانی ہیں۔ا س وقت بھی ملک کی دینی جماعتوں کے فورم ملی یکجہتی کونسل میں بیٹھے ہیں،ایم ایم اے کے حوالے سے ملک کی مختلف اہم اور سرکردہ دینی جماعتوں کے ساتھ روابط میں ہیں ۔ ہم نے ہمیشہ داخلی وحدت کے لئے ایسا طرز عمل اختیار کیا جس سے متعدد سازشیں ناکام ہوئیں۔ہمارا کسی تنطیم‘ گروہ‘ انجمن‘ جماعت‘ شخصیت سے کوئی مسئلہ نہیں۔قومی پلیٹ فارم کے تحت خدمات کا تسلسل جاری ہے۔ اس دھارے سے وابستگی آپ کی اپنی تقویت کا سبب ہے۔

علامہ ساجد نقوی نے کہا کہ مختلف ادوار کی مشکلات اور سختیوں کے باوجود یہ ملّی کارواں رواں دواں ہے ۔عوام کے بنیادی ‘ مذہبی اور شہری حقوق کے تحفظ کی جدوجہد جاری ہے۔قید و بند کی صعوبتیں تو برداشت کی جاسکتی ہیں کہ لیکن قومی مفادات اور حقوق سے دستبردار نہیں ہوا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ ہم شب و روز عوام کے ساتھ رابطے میں ہیں اورمسلسل سفر میں ہیں ضرب عضب کے ساتھ ساتھ نیشنل ایکشن پلان کے 20نکات پر عمل اسکی روح کے مطابق کرنا ہو گا ۔

 انہوں نے کہا کہ ہم کہہ چکے ہیں کہ عزاداری مذہبی‘ آئینی‘ قانونی حقوق کا مسئلہ ہی نہیں بلکہ ہماری شہری آزادیوں کا مسئلہ ہے بلکہ یہی نہیں یہ استحکام پاکستان کے لئے بھی لازم و ناگزیر ہے لہذا اس پر کوئی قدغن ،اس میں کوئی رکاوٹ،رخنہ اندازی،قابل قبول نہیں۔ افسوسناک امر ہے یہ کہ نیشنل ایکشن پلان کی آڑ میں عزاداری اور مجالس میں رکاوٹیں کھڑی کی جاتی ہیں۔اسی محرم و صفر میں بانیان مجالس‘ لائسنسداران‘ معزز و قانون پسند افراد کو ہراساں اور گرفتار کیا گیا‘ علماء و ذاکرین اور خطباء کی زبان بندیاں‘ ضلع بندی جیسے غیر قانونی اقدامات‘ چاردیواری کے اندر مجالس کی بندش جیسے غیر انسانی و غیر اخلاقی ہتھکنڈے استعمال کئے گئے، بلاجواز ایف آئی آرز کیوں درج کی گئیں؟؟؟۔ہم زور دیتے آرہے ہیں کہ ایف آئی آر آرز واپس لی جائیں اور بنیادی انسانی آزادیوں سے تعرض نہ کیا جائے۔

ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 17 اسفند 1394 12:00 ب.ظ

ڈاکٹر شہید کی زندگی کے پوشیدہ پہلو - تحریر : مولانا امداد علی گھلو

دوشنبه 17 اسفند 1394 11:54 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: ڈاکٹر شہید محمد علی نقوی کی زندگی کے پوشیدہ پہلو ،
shahid_naqavi_20__x15___poste_by_islamicwallpers
پاکستان کی تنظیمی دنیا کے سرخیل ڈاکٹرسید محمد علی نقویؒ کے بارے میں بہت کچھ کہا اور لکھا جا چکا ہے ۔ ان کی شہادت کے بعد شیعہ قومی پلیٹ فارم”تحریک جعفریہ پاکستان” کو بعض افراد نے ڈاکٹر شہید ؒکی طرف بعض باتوں کو منسوب کر کے تقسیم کیا ہے۔ پاکستان کے شیعہ تنظیمی نوجوان دو دھڑوں میں تقسیم ہیں ؛ اس مختصر تحریر میں ڈاکٹر شہیدؒ کی زندگی کے پوشیدہ پہلوؤں کو حوالہ کے ساتھ نقل کرنے کی کوشش کی گئی ہے تا کہ حق و حقیقت کے متلاشی نوجوانوں کو اپنا راستہ متعین کرنے میں آسانی رہے اور آپس کا اختلاف کم ہو اور سب ایک ہی راہ کے راہی بن سکیں۔

بسا اوقات جب ۶جولائی کی “قرآن و سنت کانفرنس”کی کامیابی اور عوامی جوش و خروش کا تذکرہ ہوتا تو ڈاکٹر صاحب بتاتے کہ اس کانفرنس کی کامیابی کے لئے علامہ سید ساجد علی نقوی و دیگر زعمائے قوم کام میں مصروف تھے۔ (سفیر انقلاب،ص۱۲۹، سال اشاعت ، فروری۱۹۹۶ء)

(علامہ ساجد نقوی ملت کی سربلندی کے کاموں میں مصروف ایک شخصیت کا نام ہے) ۶جولائی ۱۹۸۷ء کی قرآن و سنت کانفرنس کے اجتماع کے لئے جلسہ گاہ کے اہم اور حساس مسئلہ پگھلوامہ سید عارف حسین الحسینیؒ کی تجویز پر ان کے تمام رفقاء نے اختلاف کیا اور ڈاکٹر صاحب بھی دلی طور پر قائد کی تجویز سے مختلف تھے۔ مگر جونہی قائد نے ڈاکٹر صاحب کی طرف دیکھ کر فرمایا کہ میری رائے یہ ہے کہ کانفرنس”مینارپاکستان” پر منعقد ہونی چاہئے تو ڈاکٹر صاحب نے لبیک کرتے ہوئے حامی بھری اور اپنے قریبی ساتھی سے کہا:” اس شخص کی بات تین حوالوں سے ہم پر حجت ہے ایک یہ کہ یہ ہمارے قائد ہیں دوم یہ کہ ان کی ہر بات کے پیچھے کوئی اور طاقت گویا ہوتی ہے سوم یہ کہ یہ امام خمینیؒ کے نمائندہ ہیں لہذا ان کی کسی بات کے آگے چوں و چرا گناہ کرنے کے مترادف ہے۔” (سفیر انقلاب،ص۹۱)
(علامہ سید ساجد علی نقوی امام خمینیؒ اوررہبر معظم سید علی خامنہ ای کے نمائندہ رہے اور ہیں؛ ملت جعفریہ پاکستان کے آئینی اور قانونی قائد بھی ہیں اور ممکن ہے کہ ان کی ہر بات کے پیچھے بھی کوئی اور طاقت گویا ہوتی ہو)

ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 17 اسفند 1394 11:57 ق.ظ

قائد انقلاب اسلامی : امریکا ھرگز قابل اعتماد نہیں ہے

چهارشنبه 5 اسفند 1394 11:46 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت

 قائد انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے 11 فروری کو جشن انقلاب میں عوام کی پرشکوہ اور تاریخی شرکت کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہوئے اسے عوام کے عزم راسخ، استقامت اور بیداری کی نشانی قرار دیا۔

قائد انقلاب اسلامی نے زور دیکر کہا کہ چھبیس فروری کو منعقد ہونے والے انتخابات بھی قوم کی بیداری، اسلامی نظام، خود مختاری اور قومی وقار کے دفاع کا آئینہ ثابت ہوں گے۔ قائد انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ عوام الناس وسیع پیمانے پر اور مکمل آگاہی و بصیرت کے ساتھ انتخابات میں شرکت کرکے دشمن کی مرضی کے عین مخالف سمت میں قدم رکھیں گے۔ 18 فروری 1978 کو شہر تبریز کے عوام کے تاریخ ساز قیام کی مناسبت سے شہر تبریز اور صوبہ مشرقی آذبائیجان سے سالانہ ملاقات کے لئے تہران آنے والے مختلف عوامی طبقات سے خطاب میں قائد انقلاب اسلامی نے ملک کی تاریخ کے اہم اور فیصلہ کن مواقع اور خاص طور پر اسلامی انقلاب کے دوران آذربائیجان کے عوام کی استقامت، جوش و جذبے، بیداری اور گہرے جذبہ ایمانی کی قدردانی کی۔


آپ نے انقلاب کے تاریخی ایام کو ہمیشہ زندہ رکھنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے اور 11 فروری کو منائی جانے والی اسلامی انقلاب کی سالگرہ کا حوالہ دیتے ہوئے فرمایا کہ معتبر مراکز سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق اس سال پورے ملک میں 11 فروری کے جلوسوں میں عوام کی شرکت گزشتہ سال کی نسبت کافی زیادہ تھی۔ آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے 11 فروری کو جشن انقلاب کے جلوسوں میں عوام کی پرشکوہ شرکت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے فرمایا کہ اس وسیع تر پیمانے پر شرکت یہ ثابت کرتی ہے کہ عوام کے ذہنوں سے انقلاب کا نقش مٹا دینے یا اسے کمرنگ کر دینے کی استکباری محاذ کی وسیع اور متواتر کوششوں کے باوجود قوم کے عزم راسخ میں کوئی خلل پیدا نہیں ہوا ہے۔

قائد انقلاب اسلامی نے 26 فروری کو ہونے جا رہے انتخابات کا ذکر کرتے ہوئے فرمایا کہ دشمن مخصوص منصوبہ بندی کے ساتھ اپنی سازش کو عملی جامہ پہنانے کی کوشش میں ہے، بنابریں اس ملک کے اصلی مالکین کی حیثیت سے ایران کے عوام کو چاہئے کہ بعض اہم حقائق کو ضرور مد نظر رکھیں تاکہ خبیثانہ عزائم پورے نہ ہو سکیں۔ قائد انقلاب اسلامی نے یہ پس منظر بیان کیا کہ اسلامی انقلاب کی کامیابی کے ساتھ ہی ایران یکبارگی امریکا اور اور صیہونی حکومت کے ہاتھ سے نکل گیا جو ان کے لئے سب سے بڑی توہین تھی اور ان طاقتوں نے گزشتہ 37 سال کے دوران ملت ایران کی تیز رفتار پیشرفت کو روکنے کے لئے کسی بھی اقدام سے دریغ نہیں کیا ہے۔


ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 17 اسفند 1394 12:09 ب.ظ

اسلامی تحریک کا گلگت بلتستان کونسل کے انتخابات میں حصہ لینے کے فیصلہ کا اعادہ،قائد ملت جعفریہ پاکستان

چهارشنبه 5 اسفند 1394 11:41 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
پاکستان
12705240_800183346780428_4655173349151637976_n

اسلامی تحریک پاکستان گلگت بلتستان کے عہدیداران کا اجلاس گذشتہ روز قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کی سربراہی میں منعقد ہوا ۔

اجلاس میں اسلامی تحریک پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی ،مرکزی نائب صدر علامہ شیخ مرز اعلی ،ممبر مرکزی سیاسی سیل علامہ ڈاکٹر شبیر حسن میثمی ،صوبائی صدر اسلامی تحریک جی بی علامہ سیدآغا محمدعباس رضوی ،سینئر نائب صدر و سابق وزیر و ممبرجی بی قانون ساز اسمبلی دیدار علی ،ممبران گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کیپٹن (ر)سکندر علی (چےئر مین پبلک اکاونٹس کمیٹی )، کیپٹن (ر)محمد شفیع ،صوبائی ایڈیشنل سیکرٹری غلام شہزاد آغا اور سید سکند ر عباس گیلانی ایڈووکیٹ موجو د تھے ۔

اجلاس میں گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کے حوالے سے عوامی اُمنگوں کے مطابق آئینی صوبے کے قیام کا مطالبہ کیا گیا ۔ اقتصادی راہداری کے حوالے سے اورتوانائی کے منصوبوں سمیت انڈ سٹریل زون کے قیام اورگلگت سکردو روڈ کی تعمیر پر زور دیتے ہوئے روندو بھونجا ڈیم بنا نے کو علاقے کی تعمیرو ترقی اور بے روز گاری کے خاتمے کیلئے ضروری قرار دیتے ہوئے ان پر عمل درآمد کا مطالبہ کیاگیا۔

اجلاس میں جی بی کو نسل کے نتخابات میں حصہ لینے کے فیصلہ کا اعادہ کرتے ہوئے انتخابات کے طریقہ کار کو زیر بحث لایا گیا ۔ قائد ملت جعفریہ نے کہاکہ گلگت بلتستان کے مستقبل کا فیصلہ عوام کی اُمنگوں کے مطابق ہونا چاہیے اور اقتصادی راہداری میں اس اہم خطہ کونظر انداز کرنا کسی صور ت بھی بہتر نہیں بلکہ گلگت بلتستان کی عوام کو ہی سی پیک کے ثمرات ملنے چاہیں۔خطے کی آئینی حیثیت کے بارے میں انہوں نے کہاکہ جی بی کو آئینی صوبہ بنایا جائے ۔

ہم گلگت بلتستان میں سیاسی میدان میں ہیں اور عرصے سے خطے کی عوام کے فلاح وبہبود اور آئینی حقوق کے لئے جدوجہد کر رہے ہیں اور آج تک جتنے بھی سیاسی پیکج ملے ہیں اس میں ہماری جدوجہد کا بہت بڑا حصہ ہے اور اب بھی اپنے مقصد کے حصول تک ہماری جدو جہد جاری رہے گی انہوں نے مزید کہا کہ گلگت بلتستان میں موجود تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں اس اہم اور تاریخی موڑ پر اپنے جزوی و فروعی اختلافات کو بھلا کرخطہ کے مستقبل اورترقی کیلئے اپنا بھر پور مثبت کر دار ادا کریں ۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اتحاد بین المسلمین اور مذہبی ہم آہنگی کے لئے حسب سابق باہمی رابطوں کے ذریعے جدو جہد جاری رہے گی ، علامہ ساجد نقوی نے وفاقی حکومت ، آئینی کمیٹی اور اقتصادی راہداری کمیٹی پر واضح کیاکہ اقتصادی راہداری کو تحفظ دینے کیلئے آئینی حیثیت کے تعین اور اقتصادی راہداری کے تمام منصوبوں میں گلگت بلتستان کو نظر اندازنہ کیا جائے۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : چهارشنبه 5 اسفند 1394 11:43 ق.ظ

ملکی سا لمیت کے لئے دہشتگری کاخاتمہ انتہائی ضروری ہے ، علامہ عارف واحدی

چهارشنبه 5 اسفند 1394 11:38 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
Untitled
عباس ٹاون دھماکے سمیت متعدد کارروائیوں میں ملو ث ملزم کو گرفتار کرنا فرقہ وارانہ دہشتگردی کے خاتمے کیلئے سود مندثابت ہو گا ملک سے فرقہ وارانہ دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے قانون نافذ کر نے والے اداراوں کو مزید سنجیدہ اقدام کرنے کی ضرورت ہے

راولپنڈی /اسلام آباد 23فروری 2016ء

علامہ عارف حسین واحدی مرکزی سیکرٹری جنرل شیعہ علماء کونسل پاکستان نے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے ملک میں فرقہ وارانہ دہشتگردانہ کارروائیوں میں ملوث ڈیتھ سکواڈکے سرغنہ آصف چھوٹوجو عباس ٹاون دھماکے سمیت متعدد کارروائیوں اور 100سے زائد افراد کے قتل میں ملو ث ہے کو گرفتار کرنا حکومت کی جانب سے فرقہ وارانہ دہشتگردی کے خاتمے کیلئے سود مند ثابت ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا شروع دن سے یہی مطالبہ رہاہے کہ ملک سے فرقہ وارانہ دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے قانون نافذ کر نے والے اداراوں کو سنجیدہ اقدام کرنے کی ضرورت ہے اور حکومت کو کسی بھی دباو میں آئے بغیر دہشتگردوں کے خلاف جاری کارروائی کو نہیں روکنا چاہیے۔ ملکی سا لمیت کے لئے دہشتگری کاخاتمہ انتہائی ضروری ہے ۔ ملک میں شیعہ سنی کوئی مسئلہ نہیں چند مٹھی بھر تکفیری دہشتگرد ٹولہ ہی ملک میں امن کا دشمن ہے ۔ ان لوگوں کی اصلیت اور عزائم اب پاکستانی عوام کے سامنے ظاہر ہو چکے ہیں ۔

ملت جعفریہ نے اتنی قربانیوں کے باوجوکسی بھی لمحہ صبر کا دامن ہا تھ سے نہ چھوڑا اور قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کی قیادت کے رہنما اصولوں اور ہدایات پر عمل پیراں ہو کر ملت جعفریہ نے ملّی پلیٹ فارم شیعہ علماء کونسل پر متحد ہو کر اُن خفیہ ہاتھوں اور ملک دشمن عناصر کی تمام سازشوں اور کوششوں کو ناکام بنایا جو اس ملک میں فرقہ وارانہ کشیدگی کو ہوا دے کر خانہ جنگی اور قتل و غارت گری کا بازار گرم کرنا چاہتے تھے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بنانے میں اور بچانے میں ملت جعفریہ کی قربانیوں کا تسلسل جاری ہے ۔اور ہم وطن عزیز کو بچانے کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : چهارشنبه 5 اسفند 1394 11:41 ق.ظ

( حکومت نے سیکیورٹی کا بہانہ بنا کر اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے جس کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں(علامہ سید ناظر عباس تقوی

یکشنبه 2 اسفند 1394 11:41 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
na
  • آل سندھ علماء و زاکرین کنو نیشن جو نشتر پارک میں منعقد ہونا تھا حکومت نے سیکیورٹی کا بہانہ بنا کر اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے جس کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں(علامہ سید ناظر عباس تقوی)
    اگر یہ پروگرام نشتر پارک میں نہیں کر نے دیا گیا تو یہ پروگرام گورنر ہاوس یا وزیر اعلی ہا وس کے سامنے بھی ہوسکتا ہے (علامہ سید ناظر عباس تقوی)

  • حکومت سندھ اس پُر امن پروگرام میں انتشار پیدا کرکے حالات خراب کرنا چاہتی ہے (علامہ سید ناظر عباس تقوی)
    کراچی(اسٹاف رپورٹر) شیعہ علماء کو نسل صوبہ سندھ کے صدر علامہ سید ناظر عباس تقوی کا کہنا ہے کہ 27فروری کو ہونے والا آل سندھ علماء و زاکرین کنو نیشن جو نشتر پارک میں منعقد ہونا تھا حکومت نے سیکیورٹی کا بہانہ بنا کر اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے جس کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں
  • ہم پا کستان میں رہتے ہیں اور کراچی شہر کے باشندے ہیں ہم کسی بھی پروگرام کے لیے اجازت لینے کے قائل نہیں ہے ہم نے انتظامیہ کو مطلع کیا تھا کے سیکیورٹی کے انتظامات کئیے جائیں اگر حکومت سندھ سیکیورٹی کے انتظامات کر نے سے قاصر ہے تو ہم اپنی سیکیورٹی خود کریں گے اور پروگرام 27 فروری کو نشتر پارک میں ہی منعقد ہوگاجس میں ہزاروں کی تعداد میں علماء کرام شرکت کریں گے اگر کوئی بھی ناخشگوار واقعہ پیش آیا تو اس کی تمام تر زمہ داری حکومت سندھ پر عائد ہوگی
  • ہم نے صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے ایک اہم اور ہنگامہ اجلاس طلب کرلیا ہے جس میں ہم کو ئی اہم فیصلہ کر سکتے ہیں ہو سکتا ہے اگر یہ پروگرام نشتر پارک میں نہیں کر نے دیا گیا تو یہ پروگرام گورنر ہاوس یا وزیر اعلی ہا وس کے سامنے بھی ہوسکتا ہے حکومت سندھ اس پُر امن پروگرام میں انتشار پیدا کرکے حالات خراب کرنا چاہتی ہے ہمارے تمام تر انتظامات مکمل ہو چکے ہیں پورے سندھ میں دعوت نامے تقسیم ہوگے ہیں لہذاں پروگرام 27فروری کو نشترپارک میں ہی منعقد ہوگا



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : یکشنبه 2 اسفند 1394 11:44 ق.ظ

اتحاد امت کی فضا کو عملی جامہ پہنانا چاہتے ہیں۔تاکہ اتحاد امت کا خوا ب شرمندہ تعبیر کیا جا سکے۔ علامہ زاہد حسنین بخاری۔

یکشنبه 2 اسفند 1394 11:40 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
12729180_952376514846686_2361524834150337026_n
پشاورشیعہ علماء کونسل خیبر پختونخوا کے صوبائی جنر ل سیکرٹری علامہ سید زاہد حسنین بخاری نے مرکز اسلامی میں ملی یکجہتی کونسل کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ۔ایک دوسرے کے مراکز میں جاکر عوام میں اتحاد امت کی آگاہی پیدا کریں اور اس سلسلہ میں ایک عوامی رابطہ مہم کا بھی آغاز کیا جائے ۔تا کہ عام عوام تک اتحاد و وحدت کا پیغام جائے اور لوگوں میں یہ تاثر پیدا ہو کہ ہم سب مسلمان ہیں اور اور ایک ہی اللہ اور رسول کو ماننے والے ہیں ۔اجلاس میں صوبائی صدر علامہ حمید حسین امامی اور مرکزی صدر جعفریہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان برادر وفا عباس کے علاوہ دیگر مذہبی جماعتوں کے عہدادران نے شرکت و خطاب کیا۔

انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم علماء لوگ تو ایک دوسرے کی تعلیمات و مذہبی امور کو سمجھتے ہیں ۔لیکن ذیادہ مسئلہ یہ ہے عاک لوگ اس کو نہیں سمجھتے اسلئے ملی یکجہتی کے پیغام کو عوامی مقامات تک پہنچایا جائے تاکہ وحدت کی فضا قائم ہو جو وقت کی اہم ضرورت ہے۔اتحاد امت کی فضا کو عملی جامہ پہنانا چاہتے ہیں۔تاکہ اتحاد امت کا خوا ب شرمندہ تعبیر کیا جا سکے۔اور ملی یکجہتی کونسل کی فعالیت کو مزید بہتر کیا جائے ۔ بزرگان دین کی اتحاد و وحدت کی رکھی ہوئی بنیاد کو ہم نے آگے بڑھانا ہے اور انشااللہ ذمہ داری سے بڑھائیں گے۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : یکشنبه 2 اسفند 1394 11:41 ق.ظ