تبلیغات
پیروان خط ولایت فقیه پاکستان - مطالب پیروان ولایت
آقای سید ساجد علی نقوی شروع هی سے ایک متحرک ،محنتی ،زحمت کش، اور مومن مرد ہیں.امام خامنه ای

ملک میں قوانین موجود، عملدرآمدکا فقدان ہے، ذمہ دار ان درستگی حالات پر غور کریں، قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ ساجد نقوی

سه شنبه 29 تیر 1395 08:37 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: نماینده ولی فقیه علامه ساجد نقوی ،
11126929_434209856704086_548447915070397880_n

عارضی یا ایکسٹرا ایکٹ و پالیسیاں مسئلے کا حل نہیں، قوانین کے راستے سے رکاوٹیں ہٹائی جائیں، قائد ملت جعفریہ پاکستان

اسلام آباد15 جولائی 2016ء (جعفریہ پریس )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاہے کہ ملک میں قوانین موجود ہیں لیکن کہیں عملدرآمد کا فقدان ہے تو کہیں اس کے عملدرآمد میں طرح طرح کی رکاوٹیں کھڑی کردی جاتی ہیں، تحفظ پاکستان جیسے قوانین کی بجائے اگر پہلے سے موجود قوانین پر من و عن عملدرآمد کیاجائے ، ان کے نفاذ میں رکاوٹوں کو دور کیا جائے، آئین و قانون کی صحیح معنوں میں عملداری قائم کی جائے تو پھر کبھی عارضی قوانین کی ضرورت نہیں پڑے گی ، سٹرٹیجک گہرائی پالیسی کی طرح اب قومی مفا د کا نام استعمال کرنے اور ظالمانہ توازن کی پالیسی کا بھی اختتام کیا جائے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملک کی مجموعی سیاسی و امن وامان کی صورتحال پر تبصرہ اور تحفظ پاکستان ایکٹ کی مدت ختم ہونے پر اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے کیا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان کا کہنا تھا کہ نیشنل ایکشن پلان کی حمایت ملک سے دہشت گردی ، انتہاء پسندی اور فرقہ واریت کی لعنت کا چھٹکارا پانے کیلئے کی لیکن افسوس اس پر عملدرآمد اس کی روح کے مطابق کیا ہی نہیں کیاگیا۔ اس وقت بھی ہم نے کہاتھا کہ پہلے سے موجود قوانین پر اگر عملدرآمد کرایا جائے تو پھر کسی صورت کسی نئے قانون کی ضرورت محسوس نہیں ہوگی لیکن ہم نے ملک کے تحفظ ، امن و استحکام کی خاطر اس کی حمایت کی ۔

علامہ سید ساجد علی نقوی کا کہنا تھا کہ موجودہ صورتحال کے تناظر میں دیکھا جائے تو مناسب ہوگا کہ ذمہ دار حضرات اپنی پالیسیوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے درستگی حالات پر توجہ دیں اور اس کیلئے عملی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے ، انہیں چاہئیے کہ عارضی قوانین بنانے یا انہیں توسیع دینے کے بجائے حالات کو معمول پر لایا جائے، آئین کی بالادستی اور قانون کی حکمرانی کو سنجیدگی سے یقینی بنایا جائے، پہلے سے موجود قوانین پر صحیح معنوں میں عملدرآمد کرایا جائے ، ان قوانین کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دورکیا جائے اور ہر رکاوٹ کوقانون کی عملداری کیلئے راستے سے ہٹایا جائے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ کچھ عرصہ قبل منتخب پارلیمان میں سٹرٹیجک (ڈیپتھ)گہرائی پالیسی کے خاتمے کا اعلان کیاگیا اور کہاگیا کہ ماضی میں غلط پالیسی اپنائی گئی ، اسی طرح ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ قومی مفاد کا نام استعمال کرنے اور ظالمانہ توازن کی پالیسی کا بھی خاتمہ کیا جائے جس کے تحت نہ صرف ملک کے ہر شعبے وطبقے جن میں آئین و قانون، سسٹم، سیاست، معیشت، معاشرت ، ایڈمنسٹریشن اور کلچر کو ٹارگٹ کرکے تباہ کردیاگیا وہیں ملت تشیع کو بھی بے پناہ نقصان پہنچایاگیا ، اسی پالیسی کے تحت محب وطن قوتوں کو دیوار سے لگانے کی کوشش کی گئی ، امن و امان کے نام پر شہری آزادیاں تک سلب کرلی گئیں ، اب اس سلسلے کا خاتمہ ہونا چاہیے۔

علامہ سید ساجد علی نقوی نے زدور دیتے ہوئے کہاکہ اب ایسی حکمت عملی مرتب کی جائے تاکہ تمام طبقات کے تحفظات بھی دور ہوں ، ان کے مفادات کا پاس بھی رکھا جائے اور ملک کو سیکورٹی سٹیٹ کے بجائے فلاحی اسلامی جمہوری ریاست کی جانب لوٹایا جائے جس کے حصول کیلئے طویل جدوجہد اور لاکھوں قربانیاں دی گئیں ۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 29 تیر 1395 08:39 ب.ظ

ڈیرہ اسماعیل خان و بھکر کے مدارس دینیہ کے پرنسپلز و مدرسین اور آئمہ جمعہ و جماعت کا اہم مذمتی اجلاس

سه شنبه 29 تیر 1395 08:36 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
13689621_1221363487907742_333166783_n
مدرسہ جامعہ علمیہ باب النجف جاڑا ڈیرہ اسماعیل خان میں استاد العلماء علامہ غلام حسن نجفی پرنسپل مدرسہ ہذا کی صدارت میں ایک اہم اجلاس منعقد ہوا جسمیں ضلع ڈیرہ اسماعیل خان و بھکر کے مدارس دینیہ کے پرنسپلز و مدرسین اور آئمہ جمعہ و جماعت نے بھر پور شرکت کی۔

جسمیں شہید شاہد عباس شیرازی کی المناک شہادت کی بھر پور مذمت کی گئی ۔ اور حکومت سے مطالبہ کیا گیاہے۔ کہ فوراً قاتلوں کو گرفتارکرکے انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے اور شہید کے جنازے پر رونما ہونے والے نا گوار سانحے میں حجۃ الاسلام علامہ محمد رمضان توقیر کی اہانت کو ایک سوچی سمجھی سازش قرار دیا گیا اور اسکی مذمت کی گئی۔ اور قرارداد میں کہا گیا کہ ہم پورے ملک کے علماء کرام و عمائدین ملت اور دیگر ذمہ داران سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ان شرپسند عناصر کے اصل چہرے سے عوام کو آشنا کریں ۔ انکو بے نقاب کر کے ملک کو کمزور کرنے کے ان کے مذموم عزائم کو ناکام بنائیں۔

یہ اجلاس پاکستان کے بزرگ علماء کرام سے مطالبہ کرتا ہے کہ ان شرپسند عناصر کے آئے روز اقدامات سے ملت میں انتشار بڑھ رہا ہے۔ اس لئے پورے پاکستان کے علماء کرام کی ایک کانفرنس بلا کر ان کو بے نقاب کریں۔ تاکہ ملت کو کمزور کرنے کی ہر سازش ناکام ہو۔ اور اس انداز میں علماء کرام کی آئے روز توہین نہ ہو۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 29 تیر 1395 08:37 ب.ظ

قائد ملت جعفریہ پاکستان کا ڈیرہ غازی خان میں سالانہ اجتماع سے خطاب

سه شنبه 29 تیر 1395 08:35 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: نماینده ولی فقیه علامه ساجد نقوی ،
405020_154620854667243_1513068990_n

تشیع میں دو گروہ دو فرقے بن جائیں میں پاکستان میں اس کی اجازت نہیں دے سکتا یہ فرقہ بندی میری زندگی میں نہیں ہوگی۔موجود ہیں میں کوشش کروں گا سمجاوٗں گا بجھاوٗں گا میرے پاس اور طریقے بھی ہیں میرے پاس ولایت فقیہ کی جانب سے بھی اختیارات ہیں ان کو بھی میں استعمال کرسکتا ہوں مجھے قومی اختیار بھی حاصل ہے کہ میں قومی مفادات و نظریات و عقائد کی حفاظت کروں اور میں کروں گا ایک بار پھر ہم ایسے مرحلے مین پہنچے ہیں جہاں ہمیں بحرانوں کا سامنا ہے مگر جس طرح پہلے ہم بفضلِ خدا بحرانوں سے نکلے اور ہم نے تشیع کی عظمت و کامیابی کا منظر دیکھا اسی طرح اس بار بھی ہم ان بحرانوں سے مشکلات سے سرخ روح نکلیں گے اور تشیع ایک بار پھر توانا دکھائی دی گی کچھ داخلی بحران ہیں کچھ خارجی بحران ہیں بہت آسانی سے ہم نے ان بحرانوں کا مقابلہ کیا قوم کو کسی مشکل مین ڈالے بغیر ہم نے کامیابی کی منازل طے کی ہیں تشیع کا ایک رعب ہے ایک دبدبہ ہے دشمن کا کوئی مکر کامیاب نہیں ہوا اور تشیع کامیابی کی معراج پر موجود ہے زینب علیا کا وہ خطبہ یاد آتا ہے چالیں چل لو اپنا پورا زور لگالو تم نہ تو ہماری وحی مٹا سکتے ہو نہ ہی ہمارے ذکر کو ختم کرسکتے ہو ان کے کردار سے الہام لیتے ہوئے ہم نے اپنا رخ متعین کیا ہے اور جو رخ ہم اختیار کریں گے وہ قوم کے مفاد میں ہوگا جو رخ ہم اختیار کریں گے وہ ہی قوم کی کامیابی کے لئے ہوگا تشیع کے معیار کو خراب کیا جارہا ہے تشیع کے عقائد پر حملہ کیا جارہا ہے تشیع کا معیار ہے کہ امامت کی طرف رجوع کرے امامت کی جانب جو راستہ دکھایا گیا اس کی جانب رجوع کرے اگر امامت نہیں تو امامت نے جو راستہ دیا اس کی طرف رجوع کرو جو کچھ ڈیرہ اسماعیل خان میں ہوا وہ بدترین مظاہرہ ہے بداخلاقی کا تشیع ایک ملت ہے ایک نظام ہے دنیا مانتی ہے اس بات کو کہ اسلامی تۃذیب اک منبع و سرچشمہ آل محمدؑ کا گھرانہ ہے یہ جو اختلافات ہیں انجمنوں میں محلوں میں خاندانوں مین یہ اخلاقایات کی کمی کی وجہ سے ہے ہم نے نسل کی تربیت کا اہتمام نہیں کیا سب سے مضبوط سسٹم تشیع کے پاس موجود ہے مگر پاکستان میں سب سے کمزور حیثیت اگر ہے تو وہ تشیع کی ہے اس سسٹم کے ماننےوالوں کے عادات و اطوار اور چال چلن اتنے خراب ہوچکے ہیں کہ اس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے کمزور عادات رکھنے والے قوم کت افراد قو کی سرفرازی کے لئے کردار ادا نہیں کرسکتے.کوئٹہ کے راستے زیارات پر جانے کا راستہ نہیں چھوڑسکتے حکومت سن لےقوم کو ایسا راستہ دکھانا چاہئے جس سے قوم کے کردار میں بھی مضبوطی آئے تشیع کی عظمت و سربلندی بھی موجود ہو اور قوم آمادہ وتیار اور ہوشیار بھی بھی رہے میں اپکو آمادہ و ہوشیار کرتا ہوں کوئٹہ کے راستے سینکڑوں قافلے مین گزروا چکا ہوں میں جانتا ہوں میرے مزدور ساتھی جو پائی پائی جمع کرکے سال بھر میں پیسے جمع کرتے ہیں اور اس راستے سے جاتے ہیں اس امام / کے پاس جو ہماری سرحد سے سب سے نزدیک ہے امام رضا غریب الغرباءؑ میں حکومت کو کہ کر آیا ہوں کہ ہوائی جہاز چلاوٗ بحری جہاز چلاوٗ یہ راستہ ہم نہیں چھوڑ سکتے صدیوں سے ہم اس راستے سے زیارات پر جارہے ہیں تذلیل ہورہی ہے تشیع کی وہاں آج ایک زائر نے اپنے گلے پر چھری چلائی میں روزانہ ان کے لئے کر رہا ہوں ہمارا ایک انداز ہے میں نے کہا ہے کہ یہ ایف آئی آرز واپس لے لو کہین ایسا نہ ہو کہ یہ تمہارے گلے کا پھندا بن جائیں زائرین کے لئے یہ مسائل ختم کرو قوم کے اندر تشویش ہے ورنہ پھر ہم قربانی دنے والے لوگ ہیں ہماری پالیسی قربانی ہے تصادم کے قائل نہیں




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 29 تیر 1395 08:36 ب.ظ

اسلامی تحریک کے نائب صدر شیخ مرزا علی کی صدارت میں پیام شہداء کانفرنس نگر میں منعقد ہوئی

سه شنبه 29 تیر 1395 08:34 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
13734615_1042994422451942_1449999411_n

پیام شہداء کانفرنس نگر گگلت شہدائے ملت جعفریہ پاکستان بالخصوص سرزمین پاکستان کے دفاع کے دوران پاک آرمی کے شہداء جن کا تعلق وادی شہدائے نگر سے تھا ان تمام شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے (ساس) وارثانِ شہداء کی جانب سے عظیم الشان پیام شہداء کانفرنس ویلی اسقرداس میں منعقد کی گئی قائد ملت جعفریہ پاکستان آیت اللہ سید ساجد علی نقوی کو اس کانفرنس میں خصوصی شرکت کرنی تھی مگر فلائٹ کی عدم دستیابی کے باعث تشریف نہ لاسکے جس کی وجہ سے کانفرنس کی صدرات مرکزی نائب صدر اسلامی تحریک پاکستان ،شیعہ علماء کونسل شیخ مرزا علی نے کی

جبکہ دیگر مقررین نے میں شیعہ علماء کونسل گلگت ڈویژن کے صدر علامہ شیخ منیر حسین منوری،علامہ شیخ اعجاز حسین،شیعہ علماء کونسل گلگت کے رہنما شیخ اںصار حسین ،شیخ عبد الحسین،شیخ محمد عباس وزیری،رہنما مجلس وحدت مسلمین شیخ موسی کریمی اور علامہ شیخ عابدین نائب خطیب جامعہ امامیہ کھارادر کراچی اسلامی تحریک کے منتخب رکن اسمبلی محمد علی شیخ، اسلامی تحریک بلتستان کے منتخب رکن اسمبلی و چیرمین پبلک اکاونٹس کمیٹی کیپٹین ریٹائرڈ اسکندر علی، مجلس وحدت المسلمین کے منتخب رکن اسمبلی حاجی رضوان علیعلامہ شیخ محمد اقبال توسلی علامہ شیخ شبیر حسین حکیمی نے بھی خطاب کیا

علامہ شیخ مرزا علی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے ہی پاکستان بنایا، ہم نے ہی پاکستان پر اپنا سرمایہ لگایا ہم نے ہی پاک آرمی کے جھنڈے تلے کئی جنگوں میں پاکستان کی سرزمین کا دفاع کرتے ہوئے اپنی جانیں قربان کیں،وہ ہم ہی ہیں جنہوں نے گلگت بلتستان کو ڈوگرہ سے آزاد کروا کر پاکستان کے ساتھ الحاق کیا، ہم نے ہی ریاست پاکستان کے اندر مختلف مسالک اور فرقوں کے درمیان اتحاد و وحدت کا نعرہ لگایا اور دنیا بھر کے لیئے وحدت امت کی مثال قائم کی۔ مگر افسوس کہ ہم پر ہی کفر کے فتوے لگ رہے ہیں، ہمیں ہی بسوں سے اتار کر اور شناخت کر کے قتل کیا جاتا ہے، ہم پر ہی عذاداری کے حوالے سے دباو ڈالا جاتا ہے۔ ہمارے ہی بے گناہ شیعہ جوانوں کو توازن کی ظالمانا پالیسی کے تحت نانگا پربت جیسے واقعات میں ملوث دہشت گردوں کے ساتھ موازنہ کروا کر مجرم ثابت کرنے کی کوشش کی جاتی ہے۔ میں سوال کرتا ہوں کہ کہا ں ہے ریاست پاکستان، کہاں ہے ریاست کے وہ مقتدر ادارے جو عدل و انصاف کے ذمہ دار ہیں۔ ہم آج میں پر امید ہیں کہ انصاف کرنے والے ادارے اور افراد اس ریاست میں موجود ہیں اور وہ انصاف کرینگے، اور اگر ایسا نا ہوا تو یہ عدل و انصاف کا قتل ہوگا۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 29 تیر 1395 08:35 ب.ظ

عالمی اداروں کو کشمیر میں بھارتی سفاکیت کیوں نظر نہیں آتی،علامہ عارف واحدی

سه شنبه 29 تیر 1395 08:31 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
IMG_5184
کشمیریوں کی اخلاقی وسیاسی حمایت جاری رکھیں گے، شیعہ علماء کونسل
عالمی اداروں کو کشمیر میں بھارتی سفاکیت کیوں نظر نہیں آتی،علامہ عارف واحدی

مقبوضہ کشمیر میں40 سے زائد افراد شہید کردیئے گئے، کسی کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی،مرکزی سیکرٹری جنرل
راولپنڈی / اسلام آباد19 جولائی 2016ء ( )شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے کہاہے کہ مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی سفاکیت اور عوام کی مظلومیت عالمی اداروں کو کیوں نظر نہیں آتی، حقوق بشیریت کی تنظیمیں، اقوام متحدہ کیوں خاموش ہیں، او آئی سی کیا اپنا وجود بھی رکھتی ہے، چالیس سے زائد افراد شہید کردیئے گئے لیکن کسی کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی ، حکومت مسئلہ کشمیر کو مزید موثر انداز میں اٹھائے، کشمیریوں کی اخلاقی اور سیاسی حمایت جاری رکھیں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے یوم الحاق پاکستان کے موقع پر اپنے بیان اور مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ علامہ عارف حسین واحدی کا کہنا تھا کہ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کے حکم کی مکمل تائید کرتے ہیں جس میں انہوں نے مطالبہ کیاکہ مسئلہ کشمیر کو کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل کیا جائے اور تمام فریقوں کو ان کی خواہشات کا احترام کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ حالیہ چند دنوں میں چالیس سے زائد نہتے کشمیریوں کو شہید کردیاگیا، کئی دہائیوں سے مقبوضہ وادی میں بھارتی فوج ظلم و ستم کے پہاڑ ڈھا رہی ہے لیکن افسوس حقوق بشیریت کی عالمی تنظیمیں، اقوام متحدہ خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہی ہیں جبکہ عالم اسلام کی نمائندہ تنظیم او آئی سی معلوم نہیں اپنا وجود بھی رکھتی ہے یا نہیں، اس معاملے پر اس نمائندہ پلیٹ فارم کی خاموشی بھی انتہائی افسوسناک ہے ۔

علامہ عارف حسین واحدی کا مزید کہنا تھا کہ ہم مطالبہ کرتے ہیں کشمیریوں کو ان کا حق خود ارادیت دیا جائے، ان کی امنگوں کے مطابق فیصلہ کیا جائے، مسئلہ فلسطین و کشمیر عالم اسلام کے سلگتے مسائل ہیں، جنوبی ایشیاکا پائیدار امن بھی مسئلہ کشمیر سے جڑا ہے ۔ حکومت پاکستان مسئلہ کشمیر کو مزید موثر انداز میں اٹھائے ، اقوام متحدہ کو بھی چاہیے کہ اس سلسلے میں موثر اقدامات اٹھائے



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 29 تیر 1395 08:34 ب.ظ

پارہ چنار انصار الحسین دفتر پر چھاپہ پارہ چنار انتظامیہ اور صوبائی حکومت کی نا اہلی ہے۔ علامہ حمید حسین امامی

سه شنبه 31 فروردین 1395 11:36 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
13016539_987887524629299_2140936266_o copy
پشاور  شیعہ علماء کونسل خیبرپختونخوا کے صوبائی صدر علامہ حمید حسین امامی نے پشاور صوبائی دفتر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ انصار الحسین ایک فلاحی سماجی اور مذہبی ادارہ ہے اس کے دفتر پر چھاپہ لگانا قابل مذمت اقدام ہے۔ چونکہ انصار الحسین کے جوانان تعلیم فلاح و بہبود اور اتحاد بین المسلمین میں نمایا ں کردار ادا کر رہے ہیں ۔دہشت گردی اور فرقہ واریت عناصر کے بھی خلاف ہیں ۔جوانان انصار الحسین ہر میدان میں پاک آرمی کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں ۔

مقامی انتظامیہ کو چاہیے کہ ان کے ساتھ تعاون کرے۔نہ کہ دفتر پر چھاپے لگا کر گرفتاریاں کریں۔شیعہ علماء کونسل کے صوبائی صدر علامہ حمید حسین امامی نے گورنر ،چیف سیکرٹری،ہوم سیکرٹری خیبر پختونخوا سے پر زور مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ پارہ چنارانتظامیہ کی نا اہلی کانوٹس لیا جائے ۔ اور ان کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے ۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 31 فروردین 1395 11:36 ق.ظ

حکمرانوں کی کرپشن کے بڑےبڑے اسکینڈل منظر عام پر آرہے ہیں(علامہ سید ناظر عباس تقوی

سه شنبه 31 فروردین 1395 11:35 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
13016539_987887524629299_2140936266_o
پانامہ لیکس عوام کی کمائی ہوئی خون پسینے کی محنت اور دولت ہے (علامہ سید ناظر عباس تقوی)

کراچی(اسٹاف رپورٹر)شیعہ علماء کو نسل صوبہ کے صدر علامہ سید ناظر عباس تقوی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں بڑھتی ہوئی مہنگائی نے عوام کا چین و سوکھ چھین لیا ہے مہنگائی کی وجہ سے عوام اپنے بچوں کو بنیادی سہولیات دینے سے قاصر ہے عوام کا سب سے بڑامسئلہ تعلم ،صحت اور بجلی ہے جو حکمران اب تک عوام کو بنیادی سہولتیں دینے میں ناکام نظر آتے ہیں منتقلی اقتدار کا سلسلہ اس ملک میں سہالہ سال سے جاری ہے لیکن عوام کو ریلیف دینے کے لئے حکومت کے پاس کوئی پالیسی موجود نہیں زبانی دعوے مختلف پروجیکٹوں کے فیتے کاٹنے کے علاوہ حکمرانوں کے پاس کچھ بھی نہیں ہیں ۔ایک طرف عوام اپنے بچوں کی تعلم اور غزا ء کے لئے پریشان نظر آرہی ہے دوسری طرف حکمرانوں کی کرپشن کے بڑےبڑے اسکینڈل منظر عام پر آرہے ہیں پانامہ لیکس عوام کی کمائی ہوئی خون پسینے کی محنت اور دولت ہے کوئی سیاست دان سرے کا محل خر یدتاہے اور کوئی سیاست دان اربوں ڈالرزبیرون ملک سوئس بینکوں میں منتقل کررہا ہے لیکن عوام کا کوئی ایک مسئلہ حل نہیں ہوا گزشتہ 15سالوں میں حکومت نے بجلی کے خاتمے کے لئے بڑے بڑے اعلانات اور دعوے کئے لیکن اس وقت شہری علاقوں کی صورت حال یہ ہے دس سے بارہ گھنٹےلوگ بجلی سےمحروم ہے جب کہ گائوں اور دیہا توں میں اٹھارہ اٹھارہ گھنٹوں کی لود شیٹنگ کا سلسلہ جاری ہے عوام ذلت آمیز زندگی گزارنے پر مجبور ہے ریاست پاکستان ستوں پی کر سورہی ہے عوام کو کسی کی کو ئی فکر نہیں ہے اسی صورتحال کی وجہ سے سرمایہ دار پڑھالکھا طبقہ ملک چھوڈنے پر مجبور ہے نہ بنیادی مسائل اس ملک میں حل کئے جارہے ہیں نہ دہشت گردی کا مسئلہ کسی منطقی انجام تک پہنچاتا نظر اآرہا ہے ملک کی فضاء میں روزانہ ایک نیا شاخسانہ اُٹھایا جارہا ہے اور اصل عوامی مسائل کو پسِ پشت ڈال دیا جاتا ہے لگتا ایسا ہے کہ یہ سب بڑی پلنگ سے کیا جارہا ہے تاکہ عوامی مسائل کی طرف لوگ متوجہ نہ ہوسکے لوگ غربت سے تنگ آکر خود کشی کرنے اور اپنے بچوں کو بیچنے پر مجبور ہوگئے ہیں کیا یہی وہ پاکستان تھا کہ جسکا خواب قائد اعظم محمد علی جناح نے دیکھا تھا۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 31 فروردین 1395 11:36 ق.ظ

جی بی کونسل کے انتخابات میں اسلامی تحریک کی کامیابی ملی پلیٹ فارم کی کامیابی ہے،علامہ عارف واحدی

سه شنبه 31 فروردین 1395 11:33 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
1977374_406842889466154_5808871889898060335_n

اسلامی تحریک پاکستان کے مرکزی سیکرٹر ی جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے’’ گلگت بلتستان‘‘ قانون ساز اسمبلی کے کونسل ممبرا ن کے انتخابا ت میں اسلامی تحریک پاکستان کے نامزد اُمیدوار آغا سید محمد عباس رضوی کی کامیابی کو ملی پلیٹ فارم کی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسلامی تحریک پاکستان ’’ گلگت بلتستان‘‘ کی ترقی و خوشحالی کیلئے اہم کر دار ادا کر رہی ہے ۔اوراسلامی تحریک پاکستان کے اراکین اپوزیشن نشستوں پر بیٹھ کر مثبت انداز میں بلا تفریق عوامی خدمت میں مصروف عمل ہیں ۔

علامہ عارف حسین واحدی نے اسلامی تحریک پاکستان کے نامزد اُمیدوارو اسلای تحریک پاکستان کے صوبائی صدر گلگت بلتستان آغا سید محمد عباس رضوی کی رکن کونسل گلگت بلتستان منتخب ہو نے پر اسلامی تحریک پاکستان کے سربراہ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی ، چاروں ممبران کیپٹن (ر) محمد شفیع ،کیپٹن (ر)محمدسکندر علی ،شیخ محمد علی حیدر،محترمہ ریحانہ عبادی اور گلگت بلتستان قانون اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر جمعیت علماء اسلام کے رہنما حاجی شاہ بیگ،گلگت بلتستان کے عہدیداران و کارکنان کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس عمل سے علاقہ میں اتحاد و وحدت کو فروغ ملے گااور گلگت بلتستان کی پُرامن فضاء میں مزید بہتری آئے گی ۔

علامہ عارف واحدی نے مزید کہا کہ ہم سیاسی میدان عمل میں عملاًموجود ہیں اور عوام کے فلاح و بہبود و ترقی کیلئے مثبت کر دار ادا کر رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہماری جماعت کی جانب سے نے ملک بھر کے مختلف علاقوں سمیت گلگت بلتستان میں اپنی مدد آپ کے تحت ترقیاتی کاموں کا سلسلہ جاری و ساری ہے ۔ ضلع نگر میں عوام کو بجلی کی سہولت بہم فراہم کرنے کے لئے اہلیان علاقہ اور اسلامی تحریک پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ ڈاکٹر شبیر حسن میثمی و دیگر ان ذمہ داران کے تعاون وسرپرستی کے باعث پن بجلی گھر کا منصوبہ پایا تکمیل تک پہنچا ، جس کے باعث ایک دیہات کے 200گھربجلی کی سہولت سے مستففید ہو رہے ہیں جبکہ ضرورت کے وقت مزید 5دیہاتو ں600گھروں کوبجلی مہیا کرنے کی صلاحیت موجود ہے ۔آخر میں علامہ عارف حسین واحدی نے کہا کہ علاقے کی ترقی و خوشحالی میں اسلامی تحریک اپنا بھر پو ر کر دار ادا کرتی رہے گی ۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 31 فروردین 1395 11:34 ق.ظ

اسلامی تحریک کی گلگت بلتستان کونسل میں کامیابی کو اصولوں کی کامیابی قرار دیا جا سکتا ہےشیخ مرزا علی

سه شنبه 31 فروردین 1395 11:32 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
22290_480646945419081_3852214060472081629_n

اسلامی تحریک پاکستان ،گلگت بلتستان کونسل کے تمام نو منتخب ممبران کو مبارکباد پیش کرتی ہے اور امید رکھتی ہے کہ جی بی تاریخ کے نازک موڑ پر کھڑا ہے ایسے میں ممبران کونسل کی ذمہ داریاں کہیں بڑھ جاتی ہیںآئینی حیثیت کا تعین، اقتصادی راہداری کی کامیابی اورسی پیک میں گلگت بلتستان کا معقول حصہ سمیت اہم ایشوز اور کونسل سے متعلق موضوعات میں استحکام پاکستان کے پیش نظر جی بی کی مکمل نمائندگی میں بھر پور کردار ادا کریں گے ۔

اسلامی تحریک کی گلگت بلتستان کونسل میں کامیابی کو اصولوں کی کامیابی قرار دیا جا سکتا ہے اور تحریک کا ملک میں اور جی بی میں مذہبی ہماہنگی اور احترام کی سیاست کے سبب آج اس مقام پر پہنچی کہ ملک کی بڑی سیاسی جماعتوں نے بھی اعتماد کا اظہار کیا جو اسلامی تحریک کے مثبت کردار کی نشاندہی کرتا ہے

ان خیالات کا اظہار شیخ مرزا علی نے اپنے ایک اخباری بیان میں کیا اور مزید کہا کہ اسلامی تحریک پاکستان نے ہمیشہ سے رواداری ،احترام اور مفاہمت کا کردار ادا کیا اور ہمیشہ سیاسی اصولوں پر کاربند رہی اور انتخابی عمل میں بھی جماعت کے منشور کے پیش نظر میدان میں اتری جس کا نتیجہ بھی مثبت رہا اور جی بی کونسل کے انتخابات کے موقع پر بھی الیکشن کے اصولوں اور قواعد کی پابند رہی جس کی وجہ سے مسلم لیگ نے بھی تعاون کی پیشکش کی اور پیپلز پارٹی نے بھی پیشکش کی جو اصولی سیاست کی فتح ہے .جمعیت علماء اسلام کے ممبر اسمبلی و اپوزیشن لیڈر کی جانب سے اسلامی تحریک پاکستان کے امید وار کی حمایت جی بی کے عوام کیلئے ایک مثبت پیغام ہے اور امید رکھی جاتی ہے کہ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی اور امیر جمعیت علماء اسلام پاکستان مولانا فضل الرحمن کا ملکی سطح پر اتحاد امت کے ثمرات گلگت بلتستان تک پہنچیں گے اور بین المسالک خوشگوار فضا قائم کرنے میں دونوں جماعتیں کلیدی کردار ادا کرینگیں۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 31 فروردین 1395 11:33 ق.ظ

کوٹلی امام حسین (ع) ڈیرہ اسماعیل خان میں جامعۃ النجف کے زیراہتمام دو روزہ سالانہ تبلیغی اجتماع

یکشنبه 29 فروردین 1395 07:29 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
تبلیغی اجتماع، ڈی آئی خان
 
کوٹلی امام حسین (ع) ڈیرہ اسماعیل خان میں جامعۃ النجف کے زیراہتمام دو روزہ سالانہ تبلیغی اجتماع اختتام پذیر ہوگیا ہے۔

اختتامی نشست سے نماینده ولی فقیه و قاید ملت جعفریه پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے خصوصی خطاب کیا۔ انہوں نے عصر حاضر کے حالات اور مسائل پر گفتگو کرتے ہوئے انفرادی و اجتماعی ذمہ داریوں پر روشنی ڈالی۔

اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ذکر امام حسین (ع) پر کسی قسم کی کوئی پابندی نہ ماضی میں کبھی قبول کی، نہ ہی آئندہ کریں گے۔ شیعہ علماء کونسل کے مرکزی نائب صدر اور جامعۃ النجف کے سربراہ علامہ محمد رمضان توقیر نے ڈی آئی خان کے حالات پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے انتظامیہ کو متنبہ کیا کہ وہ دہشت گردوں کو فی الفور کیفر کردار تک پہنچائیں۔

دو روزہ سالانہ تبلیغی منعقد ہوا، جس میں مقامی و دیگر شہروں سے آئے ہوئے جید علماء کرام نے لیکچرز دیئے، تبلیغی اجتماع میں طالب علموں اور مومنین کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔


نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 31 فروردین 1395 11:33 ق.ظ

جے ایس او پاکستان کے زیر اہتمام وحدت اسلامی کانفرنس ۱۵ مئی ۲۰۱۶ کو راولپنڈی آرٹس کونسل ہال میں منعقد ہو گی(عبداللہ رضا، ڈویژنل صدر جے ایس او پاکستان ، راولپنڈی ڈویژن)

یکشنبه 29 فروردین 1395 07:25 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: جعفریہ اسٹو ڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان ،
4add110b-aade-4ecb-8bcd-5e320e411d4e

اسلام آباد( ) جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان راولپنڈی ڈویژن کے صدر نے اپنے ایک بیان میں کہا عالم اسلام میں بڑھتی ہوئی صیہونی و طاغوتی سازشیں جہاں پوری دنیا میں ملت اسلامیہ کا شیرازہ بکھیرنے میں مصروف عمل ہیں ۔ملک عزیز پاکستان بھی ان سازشوں سے محفوظ نہ رہ سکا۔ ملک عزیز پاکستان میں تفرقہ بازی، دہشت گردی ، الزام تراشیاں، اور بے شمار دیگر ہتھکنڈے استعمال کر کے وحدت کو پارہ پارہ کرنے کے مکروہ حیلے کیے گئے۔یہاں تک کہ ملک عزیز کے تعلیمی ادارے جہاں اقبال کے شاہین فکری بلندیوں کی طرف گامزن تھے اور جنہوں نے مستقبل میں اس ملک کی باگ دوڑ سنبھالنی ہے وہاں بھی نظریاتی دہشت گردی اور شدت پسندی کو فروغ دینے کے لیے دشمن اسلام متحرک ہو گیا۔

ڈویژنل صدر کا کہنا تھا کہ عالم اسلام کے حالات، شعائر اللہ کے خلاف گستاخانہ کوششیں، ملک میں دہشت گردی کے پے درپے واقعات، اور ملک کے نظریاتی تشخص کو مسخ کرنے کی کوششیں جیسے موضوعات اس بات کے متقاضی ہیں کہ ملک کے تعلیمی طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد اور بالخصوص طلباء تنظیمیں ان موضوعات کے کے حوالے سے ہم آہنگ ہوں۔

انہوں نے مزید کہا کہ جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان (راولپنڈی ڈویژن) کے زیر اہتمام’’وحدت اسلامی کانفرنس‘‘ اسی فکر کا حاصل ہے۔اتحاد و وحدت کے عنوان سے منعقدکی گئی اس کانفرنس میں علماء، دانشور، سیاسی و مذہبی قائدین، اساتذہ ، صحافتی برادری کے اراکین، اور متحدہ طلباء محاذ میں موجود طلباء تنظیموں کے صدور/نمائندگان شرکت فرما رہے ہیں۔اس کانفرنس کا مقصد اقبال کے شاہینوں میں اتحاد و وحدت کی فضا پیدا کرتے ہوئے ان کو ایک دوسرے کے قریب لانا اور اس قربت کے ذریعے کسی بھی قسم کے منفی پروپیگنڈے سے ان کو دور رکھنا ہے۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : یکشنبه 29 فروردین 1395 07:26 ب.ظ

اسلامی تحریک پاکستان گلگت بلتستان کونسل کے ہونے والے انتخابات کی شفافیت کی امید رکھتی ہےشیخ مرزا علی

یکشنبه 29 فروردین 1395 07:24 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
Untitled-1 copy
اسلامی تحریک پاکستان نے گلگت بلتستان کونسل کیلئے صوبائی صدر آغا سید محمد عباس رضوی کو امیدوار بنایا ہے اور اسلامی تحریک کے چاروں معزز ممبران جی بی قانون ساز اسمبلی متفق ہیں اور متفقہ طور پر جماعت کے امیدوار کی کامیابی کیلئے کوشاں ہیں اور بعض ذرائع ابلاغ میں اسلامی تحریک کے ممبران کی تقسیم کا تاثر دیا جا رہا ہے جس میں کوئی صداقت نہیں ہے ۔اسلامی تحریک پاکستان گلگت بلتستان کونسل کے ہونے والے انتخابات کی شفافیت کی امید رکھتی ہے اور الیکشن کمیشن سے توقع رکھتی ہے کہ الیکشن کے قواعد و ضوابط کو یقینی بنائے گی۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : یکشنبه 29 فروردین 1395 07:25 ب.ظ

حقوق نسواں کے معاملے کو حل کرنے کے لئے علماء کرام کی کمیٹی قائم شیعہ علماء کونسل کے مرکزی سکریٹری جنرل علامہ عارف واحدی کی اجلاس میں خصوصی شرکت

شنبه 21 فروردین 1395 10:29 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
s
حقوق نسواں کے معاملے کو حل کرنے کے لئے علماء کرام کی کمیٹی قائم شیعہ علماء کونسل کے مرکزی سکریٹری جنرل علامہ عارف واحدی کی اجلاس میں خصوصی شرکت کمیٹی نےحقوق نسواں بل میں اصلاح کے لئےسفارشات مرتب کی ہیں تاکہ قانون میں قرآن و سنت کے خلاف کوئی شق باقی نہ رھے کمیٹی میں علامہ عارف حسین واحدی اور حافظ کاظم رضا نقوی بھی شامل

اجلاس میں وزیر قانون رانا ثناء اللہ سمیت دیگر افسران اور حکومتی شخصیات موجود تھیں وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کا کہنا تھا کہ میں شکریہ ادا کرتا ہوں کہ علماء کرام نے ہمیں متوجہ کیا ہم سوچ بھی نہیں سکتے کہ قرآن و سنت کے خلاف کوئی قانون سازی کریں آپ علماء کرام نے علمی تحقیق کرکے جو سفارشات مرتب کیں ہیں ان پر عملدرآمد ہوگا

علامہ عارف واحدی نے اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا جو اسلامی خاندانی نظام ہے وہ ایک جامع نظام ہے عورت کو جو حقوق اسلام و قرآن نے دئے ہیں ایسے حقوق دنیا میں موجود کسی قانون میں موجود نہیں قطعا اسلام عورت پہ تشدد کی اجازت نہیں دیتا ابھی بھی جو قانون میں اسلامی نظام سے متصادم شقیں ہیں انکو حذف کیا جائے تاکہ ایسا تاثر نہ دیا جائے کہ اس سے اسلامی خاندانی نظام تباہ ہوجائے گاوالدین، بیٹا،بیٹی ،بھائی بہن ،شوھر بیوی کے جو جامع حقوق اسلام نے دئے ہین ان کو کوئی زک نہ پہنچے

 علامہ عارف واحدی نے کہا کہ طریقہ کار یہ ہے کہ ایک آئینی ادارہ اسلامی نظریاتی کونسل موجود ہے جو بھی قانون سازی قرآن و سنت کے حوالے سے کرنی ہو تو اسلامی نظریاتی کونسل ،علماء کرام سے رائے لی جائے تاکہ بعد میں یہ غلط فہمیاں پیدا نہ ہوں ۔اجلاس میں وزیر اعلی شہباز شریف نے اس بات کی یقین دہانی کرائی کی حقوق نسواں بل کے حوالے سے بننے والی کمیٹی مستقل رہیگی اور آئندہ علماء کرام سے مشاورت کی جائے گی



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : شنبه 21 فروردین 1395 10:30 ق.ظ

اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکرقانون ساز اسمبلی کے علم میں لائے بغیر رکن اسمبلی کیپٹین شفیع کی گرفتاری انتہائ قابل مذمت اور اسمبلی کی توہین ہے اسلامی تحریک

شنبه 21 فروردین 1395 10:28 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: شیعہ علماء کونسل/ اسلامی تحریک پاکستان ،
Untitled-2 copy
پریس کانفرینس سے میں صوبائی صدر آغا سید محمد عباس رضوی، سینیئر نائب صدر دیدار علی، محمد علی شیخ سیکٹری جنرل، شیخ منیر حسین منوری ڈویژنل صدر اور دیگر اراکین شریک تھے۔

پریس کانفرینس سے خطاب کرتے ہوئے آغا سید محمد عباس رضوی نے کہا کہ مخصوص ایجنڈے کی تکمیل اور سیاسی مقاصد کے حصول کے لیئے اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکرقانون ساز اسمبلی کے علم میں لائے بغیر رکن اسمبلی کیپٹین شفیع کی گرفتاری انتہائ قابل مذمت اور قانون ساز اسمبلی کی توہین ہے۔ رکن اسمبلی کی گرفتاری کا مقصد علاقے میں انتشار پھیلانا ہے، حکومت ہمارے صبر کا امتحان نہ لے۔
ہم پرامن ماحول کے حامی ہیں اور مشکل کی اس گھڑی میں احتجاج کر کے بدامنی نہیں پھیلانا چاہتے، حکومت کیپٹین شفیع اور ان کے ساتھیوں کو فوری طور پر رہا کرے،

پریس کانفرینس سے خطاب کرتے ہوئے آغا عباس رضوی اور دیدار علی نے کہا کہ حالیہ بارشوں اور سیلاب نے گلگت بلتستان کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے،حکومت کی ذمہ داری تھی کہ وہ سیلاب متاثرین کی بھرپور مدد کرتی اور تمام طبقہ فکر کے لوگوں کو ساتھ لے کر چلتی مگر صوبائی حکومت انتقامی سیاست پر اتر آئی ہے اور ہمارے رکن اسمبلی جو کہ سیلاب متاثرین کی مدد کر رہا تھا ان پر انسدار دہشتگردی ایکٹ کے تحت مقدمات بنائے گئے جس کی وجہ سےرکن اسمبلی اور ممبران اسمبلی کا استحقاق مجروح ہوا ہے جو کہ ناقابل برداشت ہے،
کیپٹین شفیع نے ضلعی انتظامیہ، ڈی سی اور ڈیزاسٹر مینیجمینٹ اتھارٹی سے خصوصی درخواست کر کے اوشکھنداس کے متاثرین سیلاب کے لیئے ٹینٹ منظور کروائے، جبکہ متاثرین میں حکومت کی طرف سے دی گئی لسٹ کے مطابق ٹینٹ تقسیم کیئے گئے، مگر اس کو بعد میں غلط رنگ دیا گیا اور الٹا ممبر اسمبلی اور 18 دیگر متاثرین سیلاب کو جیل بھجوا دیا گیا، گرفتار افراد میں ایک گونگا بھی شامل ہے جس کا گھر متاثر ہوا ہے، ہمارے اراکین اسمبلی نے اس معاملے کو افہام و تفہیم کے ساتھ حل کرنے کی بھر پور کوشش کی مگر تا حال کوئ خاطر خواہ نتیجہ حاصل نہیں ہوا، کیپٹین ریٹائرڈ اسکندر علی اور محمد علی شیخ نے مسلم لیگ ن کے ذمہ داران سے رابطہ کیا جبکہ وزیر اعلی حفیظ الرحمان سے کو بھی صورتحال سے آگاہ کیا مگر اب تک کوئی پیش رفت نہیں ہوئ۔ انہوں نے کہا کہ یہ وقت احتجاج کا نہیں ہے اسلیئے حکومت فوری اقدام کرے۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : شنبه 21 فروردین 1395 10:29 ق.ظ

امریکہ اور بعض مغربی ممالک پر ہرگز اعتماد نہیں کیا جاسکتا، آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای

شنبه 21 فروردین 1395 10:22 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: ولی فقیه امام خامنه ای ،
1



قائد انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے عید نوروز کی مناسبت سے ملاقات کے لئے آنے والے کابینہ کے ارکان، پارلیمنٹ مجلس شورائے اسلامی کی صدارتی کمیٹی کے ارکان، عدلیہ کے عہدیداران اور بعض دیگر محکموں کے حکام سے خطاب کرتے ہوئے عہدیداروں کا شکریہ ادا کیا اور مزاحمتی معیشت کے نفاذ کے لئے حکومت کی مربوط مساعی اور مشقتوں کی قدردانی کرتے ہوئے زور دیا کہ ان پالیسیوں کے نفاذ کے لئے ملک کے حکام کے درمیان یکجہتی اور ہمدلی و ہم زبانی بہت اہم ہے۔

رہبر انقلاب اسلامی نے زور دیکر کہا کہ استقامتی معیشت کی مرکزی کمان کو چاہئے کہ مجریہ اور خود محترم نائب صدر کی قیادت میں تمام محکمہ جات کا تعاون اور مدد حاصل کرے، مختلف شعبوں کی کارکردگی اور پیش قدمی پر گہری نظر رکھے اور داخلی پیداوار کی سنجیدگی کے ساتھ پشت پناہی کرتے ہوئے مزاحمتی معیشت کے تحت 'اقدام و عمل' کو عملی جامہ پہنانے کے مقصد سے ہمہ جہتی اور ہمہ گیر اقدام کی زمین ہموار کرے۔

قائد انقلاب اسلامی نے زور دیکر کہا کہ مزاحمتی معیشت میں اقدام اور عمل اس انداز سے ہونا چاہئے کہ سال ختم ہونے پر مختلف شعبوں کی متعلقہ کارکردگی کی صحیح اور واضح رپورٹ پیش کرنا ممکن ہو۔ آپ نے فرمایا کہ اجرائی اداروں کا پورا نظام مزاحمتی معیشت کی پالیسیوں کے اجراء کی توانائی رکھتا ہے اور پارلیمنٹ کو بھی چاہئے کہ اس سلسلے میں حکومت کی مدد کرے۔ رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ ہم حکومت سے بہت زیادہ توقعات نہیں وابستہ کر رہے ہیں اور ہمیں وسائل اور بجٹ کی کمی اور مشکلات کا بھی اندازہ ہے، لیکن بعض شعبوں میں کفایت شعاری کرکے بعض دیگر شعبوں کی کمیوں اور خلا کو دور کیا جا سکتا ہے۔

آیت اللہ العظمی خامنہ ای کا کہنا تھا کہ ملک کے اعلی عہدیداران بڑے تجربہ کار، چنندہ اور فکر و عمل اور جوش و جذبے سے سرشار افراد ہیں، آپ نے فرمایا کہ مرکزی کمان جو فکر کا بھی مرکز ہے اور عمل کا بھی محور ہے ملک کے اندر موجود بہترین انتظامی صلاحیتوں سے بھرپور استفادہ کرے اور فیصلہ سازی اور اجرائی مراحل کے لئے مختلف محکموں کی توانائیوں اور صلاحیتوں کو بروئے کار لائے۔ قائد انقلاب اسلامی نے زور دیکر کہا کہ ملک کو چلانا جس کی ذمہ داری حکومت اور خود صدر محترم کی ہے بیحد دشوار کام ہے، آپ نے فرمایا کہ صدر محترم کی حد درجہ مصروفیات کے پیش نظر نائب صدر جو ایک نمایاں مقام رکھتے ہیں مزاحمتی معیشت کی اعلی کمان کے تعلق سے خاص کردار ادا کر سکتے ہیں۔

رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے زور دیکر کہا کہ حکومت، پارلیمنٹ اور عدلیہ میں جو بھی اقدام عوام کے مفادات کے لئے اور انکی مشکلات کے ازالے کی خاطر ہو اس کی بھرپور حمایت کروں گا، لیکن یہ نظر آنا چاہئے کہ جو کام انجام دیا جا رہا ہے وہ قومی مفادات کے حق میں اور ضروری ہے۔ قائد انقلاب اسلامی کا کہنا تھا کہ مزاحمتی معیشت کی پالیسیوں کے اجراء کے لئے داخلی توانائیوں اور صلاحیتوں پر تکیہ کیا جانا چاہئے۔



ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : شنبه 21 فروردین 1395 10:31 ق.ظ



کی تعداد صفحات: 109 1 2 3 4 5 6 7 ...