تبلیغات
پیروان خط ولایت فقیه پاکستان - مطالب پاکستان
آقای سید ساجد علی نقوی شروع هی سے ایک متحرک ،محنتی ،زحمت کش، اور مومن مرد ہیں.امام خامنه ای

ڈیرہ اسماعیل خان و بھکر کے مدارس دینیہ کے پرنسپلز و مدرسین اور آئمہ جمعہ و جماعت کا اہم مذمتی اجلاس

سه شنبه 29 تیر 1395 08:36 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
13689621_1221363487907742_333166783_n
مدرسہ جامعہ علمیہ باب النجف جاڑا ڈیرہ اسماعیل خان میں استاد العلماء علامہ غلام حسن نجفی پرنسپل مدرسہ ہذا کی صدارت میں ایک اہم اجلاس منعقد ہوا جسمیں ضلع ڈیرہ اسماعیل خان و بھکر کے مدارس دینیہ کے پرنسپلز و مدرسین اور آئمہ جمعہ و جماعت نے بھر پور شرکت کی۔

جسمیں شہید شاہد عباس شیرازی کی المناک شہادت کی بھر پور مذمت کی گئی ۔ اور حکومت سے مطالبہ کیا گیاہے۔ کہ فوراً قاتلوں کو گرفتارکرکے انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے اور شہید کے جنازے پر رونما ہونے والے نا گوار سانحے میں حجۃ الاسلام علامہ محمد رمضان توقیر کی اہانت کو ایک سوچی سمجھی سازش قرار دیا گیا اور اسکی مذمت کی گئی۔ اور قرارداد میں کہا گیا کہ ہم پورے ملک کے علماء کرام و عمائدین ملت اور دیگر ذمہ داران سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ان شرپسند عناصر کے اصل چہرے سے عوام کو آشنا کریں ۔ انکو بے نقاب کر کے ملک کو کمزور کرنے کے ان کے مذموم عزائم کو ناکام بنائیں۔

یہ اجلاس پاکستان کے بزرگ علماء کرام سے مطالبہ کرتا ہے کہ ان شرپسند عناصر کے آئے روز اقدامات سے ملت میں انتشار بڑھ رہا ہے۔ اس لئے پورے پاکستان کے علماء کرام کی ایک کانفرنس بلا کر ان کو بے نقاب کریں۔ تاکہ ملت کو کمزور کرنے کی ہر سازش ناکام ہو۔ اور اس انداز میں علماء کرام کی آئے روز توہین نہ ہو۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 29 تیر 1395 08:37 ب.ظ

جنرل راحیل شریف نے مزید 13 دہشتگردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی

سه شنبه 25 اسفند 1394 08:53 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
سپہ سالار نے مزید 13 دہشتگردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی
 
پاک فوج کے سپہ سالار جنرل راحیل شریف نے مزید 13 دہشگردوں کو سزائے موت دینے کی توثیق کردی ہے۔ پاک فوج کے ادارہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے کہا ہے کہ 13 دہشت گردوں کیخلاف مختلف فوجی عدالتوں میں مقدمات چلائے گئے تھے اور الزامات ثابت ہونے پر سزائے موت سنائی گئی۔ آرمی چیف نے 13 دہشت گردوں کو سزائے موت دینے کی باضابطہ توثیق کر دی ہے۔

سزائے موت سنائے جانے والے دہشتگردوں میں اصغر خان، احمد علی اور ہارون رشید، مشتاق احمد، محمد نواز، تاج گل، بخت امیر، عزیز خان، فضل غفار، اصغر خان ولد احمد جان شامل ہیں اور ان کا تعلق کالعدم تنظیم تحریک طالبان سے ہے۔

آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں میں سیدو شریف ایئرپورٹ، نانگا پربت بیس کیمپ میں غیر ملکیوں کو قتل کرنے، سکولز، مسلح افواج، شہریوں کو نشانہ بنانے والے دہشتگرد شامل ہیں۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : سه شنبه 25 اسفند 1394 08:54 ب.ظ

کراچی کے مختلف علاقوں سے 10 ٹارگٹ کلرز گرفتار، اسلحہ برآمد

دوشنبه 23 شهریور 1394 09:54 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،


رپورٹ کے مطابق ترجمان رینجرز کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کراچی کے مختلف علاقوں میں چھاپے مار کر کالعدم تنظیموں اور سیاسی جماعت سے تعلق رکھنے والے 10 ٹارگٹ کلرز کو گرفتار کر کے ان کے قبضے سے اسلحہ و بارود برآمد کر لیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ان ٹارگٹ کلرز کو جیکب لائن، جٹ لائن، لیاقت آباد اور شاہ فیصل کالونی سے گرفتار کیا گیا ہے۔

رینجرز حکام کے مطابق گرفتار ٹارگٹ کلرز میں سے 4 کا تعلق کالعدم تنظیموں، 3 کا تعلق متحدہ قومی مومنٹ اور 3 کا تعلق ایم کیو ایم حقیقی سے ہے۔ ملزمان کے قبضے سے پستول اور کلاشنکوف سمیت مختلف اقسام کے 13 سے زائد ہتھیار اور دستی بم برآمد ہوئے۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 23 شهریور 1394 09:55 ق.ظ

تہران، پاکستانی وفد کا ایرانی حکام سے گیس پائپ لائن کی تعمیر پر تبادلہ خیال

دوشنبه 19 مرداد 1394 07:45 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
تہران، پاکستانی وفد کا ایرانی حکام سے گیس پائپ لائن کی تعمیر پر تبادلہ خیال
 

 
 ایرانی نائب وزیر تیل کا کہنا ہے کہ ایران پاکستان گیس پائپ لائن کی تعمیر پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے پاکستانی وفد تہران پہنچا ہے۔ پاکستانی حکام پائپ لائن کی تعمیر شروع کرنا چاہتے ہیں، تاہم مذاکرات کو ابھی تک حتمی شکل نہیں دی گئی ہے۔ دونوں فریق ابھی ابتدائی بات چیت میں مصروف ہیں۔ پاکستان نے اپنے حصے کی تکمیل اپنی سرمایہ کاری سے کرنی ہے۔ ایرانی نشریاتی ادارے "پریس ٹی وی" کے مطابق بین الاقوامی امور اور تجارت کے لئے ایران کے نائب وزیر تیل امیر حسین زمانیہ نے کہا کہ پاکستانی مندوبین ایرانی حکام کے ساتھ اپنی سرزمین پر پائپ لائن کی تعمیر کی بحالی پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے ایران میں موجود ہے۔ ایران پاکستان گیس پائپ لائن جسے امن پائپ لائن بھی کہا جاتا ہے، اسے ایران کی جنوبی پارس گیس فیلڈ سے بڑی مقدار میں پاکستان کو گیس کی فراہمی کے لئے تعمیر کیا جانا ہے۔

ایران پہلے سے ہی پائپ لائن کا اپنا حصہ 900 کلومیٹر مکمل کرچکا ہے اور پاکستان پر اس کے حصہ کی تعمیر کے لئے زور دیا ہے، تاہم پاکستانی حکام نے فنڈز کی کمی کی وجہ سے منصوبے کے اپنے حصے کی تکمیل نہیں کی۔ 2008ء میں تہران اور اسلام آباد کے درمیان دستخط کئے گئے معاہدے کے مطابق پاکستان میں ایران سے گیس کی منتقلی دسمبر 2014ء میں مکمل ہونا تھی، منصوبے کے آپریشنل میں تاخیر کی صورت میں اسلام آباد کو جرمانہ ادا کرنا تھا۔ اپریل میں چینی صدر کے دورہ پاکستان کے موقع پر کہا گیا کہ بیجنگ ایران سے گیس لانے کے لئے پائپ لائن کی تعمیر میں سرمایہ کاری کرے گا۔ 700 کلومیٹر پائپ لائن چینی سرمایہ کاروں اور 80 کلومیٹر اسلام آباد نے تعمیر کرنی تھی۔ پٹرولیم اور قدرتی وسائل کے پاکستانی وزیر شاہد خاقان عباسی نے ایران کے جوہری مذاکرات کے حتمی شکل کے بعد کہا تھا کہ وہ رکے منصوبے کو بحال کرنے کے لئے پرامید ہیں۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : دوشنبه 19 مرداد 1394 07:46 ب.ظ

دہشتگردوں کے پاس سرنڈر اور مرنے کے علاوہ کوئی تیسرا آپشن نہیں۔ انسپکٹر جنرل ایف سی میجر جنرل شیر افگن

یکشنبه 11 مرداد 1394 12:11 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
میجر جنرل شیرافگن کیجانب سے تفتان میں زائرین کیلئے ہوٹل کا باقاعدہ افتتاح

انسپکٹر جنرل ایف سی میجر جنرل شیر افگن نے کہا ہے کہ بھارت بلوچستان کے راستے پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیاں کررہا ہے۔ بی ایل اے، بی آر اے اور بی ایل ایف کو اسلحہ، کمیونیکیشن اور پیسے انہی سرحدی علاقوں سے دیئے جارہے ہیں۔ دہشتگردوں کے پاس سرنڈر اور مرنے کیلئے علاوہ کوئی تیسرا آپشن نہیں۔ بلوچستان میں دہشتگردی کے خاتمے کیلئے ایف سی کے جوانوں نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں۔ اس موقع پر ایم پی اے نوشکی حاجی میر غلام دستگیربادینی، میر کریم نوشیروانی، سابق وفاقی وزیر سردار عمر گورگیج، نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماء سردار آصف شیر جمالدینی، کمانڈنٹ نوشکی ملیشیاء مظہرالحسن، ڈپٹی کمشنر حمید اﷲ ناصر، ڈی پی او نذر جان بلوچ ودیگر بھی موجود تھے۔ اس سے قبل آئی جی ایف سی بذریعہ ہیلی کاپٹر نوشکی پہنچے تو ایف سی کے چاک وچوبند دستے نے انہیں سلامی پیش کی۔ قبائلی عمائدین، عوامی نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے آئی جی ایف سی نے کہا کہ پاکستان کی اہمیت اور حیثیت صرف بلوچستان کی وجہ سے ہے۔ پاکستان کا مستقبل بلوچستان سے وابستہ ہے۔ اﷲ پاک نے اس خطہ کو مالا مال بنا دیا ہے۔ مگر چند عناصر نہیں چاہتے کہ بلوچستان ترقی کریں۔ کالعدم تنظیموں کے سربراہوں کے اپنے بچے اور رشتہ دار بیرون ملک پڑھتے ہیں۔ مگر یہاں وہ عام عوام کو اپنے مقاصد کیلئے استعمال کررہے ہیں اور یہاں کے لوگوں کو ابھی تک خانہ بدوش کی زندگی گزارنے پر مجبور کر دیا ہے۔ فوج اور ایف سی اپنی عوام کے محافظ ہیں اور عوام کے تحفظ کیلئے ہی جوان اپنی جانوں پر کھیل رہی ہیں۔ دہشت گردوں کے خلاف جنگ صرف فوج اور ایف سی کی نہیں بلکہ ہم سب کی ہے۔ ہم سب کی مشترکہ زمہ داری ہے کہ ہم دہشت گردوں کے عزائم ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز کے ساتھ مربوط تعاون کریں اور انہیں اپنے درمیان جگہ نہ دیں۔ ریاست کے خلاف کھڑے ہونے والوں کے لئے صرف مرنے کے کوئی دوسری چوائس نہیں ہے۔

ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : یکشنبه 11 مرداد 1394 12:15 ب.ظ

حافظ حفیظ الرحمن کو وزیر اعلی کس نے بنایا۔۔۔؟؟؟رضا احسن 03338793020جواب Whatsapp

شنبه 20 تیر 1394 11:06 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
images (1)
حافظ حفیظ الرحمن کو وزیر اعلی کس نے بنایا۔۔۔؟؟؟
رضا احسن 03338793020 Whatsapp کے نام سے درج بالا عنوان کے تحت ایک تحریر نیٹ پر ڈالی گئی جو اگرچہ سنی سنائی‘ رٹی رٹائی‘ کمزور اور کچی باتوں پر مشتمل ہے لیکن عوام کے ذہنوں کو کثافت سے پاک رکھنے کے لئے کئی باتوں کے بارے میں وضاحت ضروری ہے۔

(1) لکھتے ہیں: ۔ الیکشن کے نتائج فطری تقاضوں کے مطابق ہوتے ہیں جیسے کہ ایک رائے یہ پائی جاتی ہے کہ گلگت بلتستان کے عوام کی یہ کوشش ہوتی ہے کہ جس پارٹی کی وفاق میں حکومت ہو اس خطے میں بھی وہی حکومت ہو۔
وضاحت: ۔ اس اعتراف کے ساتھ اپنے سوال کا جواب خود دے دیا اور واضح کردیا کہ فلاں کو وزیر اعلی کس نے بنایا؟

(2) لکھتے ہیں: ۔ وزیر اعلی کی شیعہ دشمنی تب ثابت ہوگئی جب انہوں نے اسلامی تحریک کو اپنی حکومت کا حصہ بنانے سے انکار کردیا۔
وضاحت: ۔ انکار تو تب ہوتا ہے جب خواہش کا اظہار کیا جائے جبکہ اسلامی تحریک پاکستان نے حکومت کا حصہ بننے کی خواہش کا کبھی بھی اظہار نہیں کیا یہ کھلی الزام تراشی ہے۔ مذہب کا حوالہ رکھنے والوں کو جھوٹ سے گریز کرنا چاہیے۔

(3) لکھتے ہیں : ۔ حالیہ الیکشن کے اندر فقط ایم ڈبلیو ایم کی مخالفت میں ن لیگی امیدواروں کو سپورٹ کیوں کیا؟
وضاحت:۔ ن لیگ سے شیعہ امیدوار اور ایم ڈبلیو ایم سے شیعہ امیدوار میں ایک کو ترجیح دینے کا اختیار کس کے پاس ہے؟ آپ کے پاس؟ کس نے دیا؟

(4) لکھتے ہیں: ۔ اگر اسلامی تحریک پاکستان ن لیگی امیدوار کی بجائے اپنے امیدواروں کو سپورٹ کرتی۔۔۔
وضاحت: ۔ یہ انتہائی بے تکی بات ہے۔ دونوں شیعہ دونوں اپنے ہیں۔

(5) لکھتے ہیں: ۔ کیا اسلامی تحریک پاکستان نے آغا راحت الحسینی کے مائنس ن لیگی فارمولے کو مسترد نہیں کیا؟
وضاحت : موصوف کو فارمولے کا مفہوم بھی معلوم نہیں ایسا کوئی فارمولہ نہیں تھا۔ البتہ ان کے فارمولے کو تسلیم کرکے ہی اسلامی تحریک پاکستان نے اپنے امیدوار دستبردار کرادیئے تھے پھر خرابی کہاں سے آئی؟ فلاں وزیر اعلی کیسے بنا؟ اس کی تحقیق کریں ۔ بے پر کی نہ اڑائیں۔

ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : شنبه 20 تیر 1394 11:08 ق.ظ

اپوزیشن لیڈر کا انتخاب _ حقائق نامہ (سید محسن رضا نقوی )

جمعه 12 تیر 1394 07:27 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
download

اپوزیشن لیڈر کا انتخاب _ حقائق نامہ (سید محسن رضا نقوی )

گلگت بلتستان الیکشن میں ایک شیعہ گروہ کی پالیسی کی وجہ سے جو نقصان ھوا وہ تو سب کے سامنے ہے لیکن مجلس وحدت اپنی وہی پالیسی جاری رکھے ہوے ہے ، جیسا کہ آپ کو پتا ہے کہ الیکشن کے بعد حکومت سازی اور اپوزیشن لیڈر کے انتخاب کا مرحلہ ھوتا ہے۔گلگت بلتستان اسمبلی میں یہ مراحلہ مکمل ھو چکا ھے،وہ کیسے ھوا اس پر بات کرنے سے پہلے پارٹی پوزیشن واضع کر دوں۔

مسلم لیگ نواز: 22 سیٹیں لے کر پہلے
اسلامی تحریک: 4 سیٹیں لے کر دوسرے
مجلس وحدت: 3 سیٹیں لے کر تیسرے
پیپلز پارٹی: 1 سیٹ،جمیت علماء اسلام (ف) اور تحریک انصاف بھی 1 سیٹ لے کرتینوں جماعتیں چوتھے نمبر پر رہیں جب کہ
ایک آزاد امیدوار بھی ھےـ

اب آتے ہیں حکومت واپوزیشن سازی کی طرف __
مسلم لیگ نواز کے علاوہ باقی تمام جماعتوں نے اپوزیشن میں بیٹھنے کا فیصلہ کیا اس لئیے اسمبلی میں بھاری اکثرت کیوجہ سے اسپیکر،ڈپٹی اسپیکر،اور وزیر اعلی کے عہدوں پر مسلم لیگ نواز کا حق بنتا تھا لیکن اپوزیشن جماعتوں نے الیکشن لڑنے فیصلہ کیا،جس کے مطابق تحریک انصاف کے جہانزیب اسپیکراور مجلس وحدت کے امتیاز کاچوڈپٹی اسپیکر کا الیکشن لڑیں گے، لیکن عین انتخاب کے وقت دونوں امیدوارں نے متحدہ اپوزیشن کے فیصلے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مسلم لیگ نواز کے امیدوارں کے حق میں کاغذات واپس لے لئے جس سے مسلم لیگ نواز کے امیدوارں بلامقابلہ منتخب ھو گئے۔

یہاں ان لوگوں سے سوال ھے کہ جو جھوٹ بول بول کر کہتے تھے تم مسلم لیگ نواز کے اتحادی ھو، سوال یہ کہ تمھارا امیدوار مسلم لیگ نواز کے حق میں دستبردارکیوں ھوا؟؟؟ وزیر اعلی بھی مسلم لیگ نواز کا منتخب ھو گیا۔


ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : جمعه 12 تیر 1394 07:31 ب.ظ

عوامی ایکشن کمیٹی کی کال پرگلگت بلتستان میں پہیہ جام ہڑتال اوراحتجاجی دھرنے جاری

جمعه 29 فروردین 1393 09:56 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
n00373015-t
گندم پر سبسڈی کے خاتمہ کیخلاف اور 9 نکاتی چارٹر آف ڈیمانڈ  پر مکمل عمل درآمد کیلئے آج عوامی ایکشن کمیٹی کی کال پرگلگت بلتستان میں پہیہ جام ہڑتال اور دھرنے جاری ہیں اورصوبہ بھرکی تمام اہم شاہراہیں اور چوراہے بند ہیں۔ بلتستان میں ضلع خپلو، سب ڈویژن کھرمنگ، روندو اور شگر میں بھی درجنوں مقامات پر احتجاجی دھرنے جاری ہیں جبکہ بلتستان کی اہم شاہراہیں جن میں شاہراہ ریشم، اسلام آباد اسکردو روڈ، کے ٹو کو جانے والی سڑک، سیاچن روڈ، کرگل لداخ روڈ اور نواحی علاقوں کو آپس میں ملانے والی سڑکیں بھی بند ہیں۔ بلتستان میں مرکزی دھرنا یادگار شہداء اسکردو پر جاری ہے جہاں عوام کا ایک جم غفیر موجود ہے۔ ذرائع کے مطابق صبح سے ہی اسکردو شہر کے تمام اہم چوراہوں پرلوگ جمع ہوگئے، جو ریلیوں کی شکل میں مرکزی دھرنے میں شامل ہوتے رہے۔ اسکردو شہر کی فضا  “جینا ہوگا مرنا ہوگا” “دھرنا ہوگا دھرنا ہوگا” “حق کی خاطر لڑنا ہوگا” اور حکومت مخالف نعروں سے گونج اٹھی ہے۔ عوامی ایکشن کمیٹی کے اعلان کے مطابق یادگار شہداء اسکردو پر چارٹر آف ڈیمانڈ کی منظوری تک دھرنا جاری رکھا جائے۔ ادھرگلگت میں بھی آج صبح سے شہرکی تمام بڑی و چھوٹی مارکیٹیں بند رہیں اور پبلک ٹرانسپورٹ بھی معمول سے نہایت کم رہی، جبکہ سرکاری و غیر سرکاری اداروں سمیت تمام نجی و سرکاری تعلیمی اداروں میں حاضری میں نمایاں کمی دیکھی گئی۔ سڑکوں پر پرائیویٹ ٹرانسپورٹ بھی نہ ہونے کی برابر رہی۔ ضلع گلگت کے مضافاتی علاقوں جگلوٹ، دنیور، اوشکھنداس، جلال آباد، بارگو، شروٹ، مناور و دیگر علاقوں میں بھی مکمل ہڑتال ہے۔ اس موقع پر پاکستان کو چین سے ملانے والی شاہراہ قراقرم بھی جگہ جگہ دھرنے دیکر مکمل طور پر بند کر دی گئی ہے۔  گلگت شہر میں مرکزی دھرنا گھڑی باغ کے مقام پر جاری ہے۔ جہاں عوامی ایکشن کمیٹی کے راہنماوں کے علاوہ عوام کی بڑی تعداد مطالبات پر عمل درآمد کیلئے موجود ہیں۔

واضح رہے کہ عوامی ایکشن کمیٹی کی ہڑتال میں شیعہ علماء کونسل سمیت گلگت بلتستان کی تمام سیاسی، مذہبی اور مقامی تنظیمیں شریک ہیں ۔اطلاعات کے مطابق جی بی کی تاریخ میں ایسی کامیاب ہڑتال اور منظم احتجاج اس سے پہلے کبھی نہیں دیکھا گیا، جس میں تمام مکاتب فکر کے افراد کی حمایت شامل ہے-




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : جمعه 29 فروردین 1393 09:57 ب.ظ

ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے زیراہتمام دوسری عالمی اتحاد امت کانفرنس کا انعقاد،قائد ملت جعفریہ پاکستان کی خصوصی شرکت اور خطاب

جمعه 29 فروردین 1393 09:55 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
10168166_325704767554596_3982235375203102119_n

 منگل کے روز اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں ملی یکجہتی کونسل کے زیر اہتمام دوسری عالمی اتحاد امت کانفرنس کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں کونسل کی نمائندہ جماعتوں کے وفود کے ساتھ ساتھ ایران اور افغانستان سے بھی مندوبین نے شرکت کی۔ ایرانی وفد میں آقائے سید مہدی علیزادہ موسوی اور حجۃ الاسلام ڈاکٹر محمود وزیری شریک تھے۔  کانفرنس میں ملک و بیرون ملک کے مختلف مسالک کے جید علمائے کرام، یونیورسٹیز کے پروفیسرز و دیگر نے خطاب کئے۔
تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ملی یکجہتی کونسل کے سربراہ صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر نے کہا کہ کچھ لوگ اپنے پیٹ کی خاطر امت میں افتراق ڈالتے ہیں، ہمیں تفرقہ پرستوں سے برات کا اظہار کرنا ہوگا، ہر مسلک میں ایسے افراد موجود ہیں جو دوسرے مسالک کی توہین و تکفیر کرتے ہیں، اگر دینی جماعتیں اکٹھی ہوجائیں تو نظام مصطفٰی ؐ کا سورج ضرور طلوع ہوگا۔
عالمی اتحاد امت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نمایندہ ولی فقیہ قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہا کہ امت مسلمہ خصوصاً پاکستان کو بےشمار مسائل کا سامنا ہے، جس کا حل صرف اتحاد میں مضمر ہے۔ انہوں نے کہا کہ  ان حالات میں ملک کو اتحاد کی اشد ضرورت ہے مگر افسوس اس ملک میں فرقہ واریت کو ہوا دینے کی کوشش کی گئی اور تفرقہ پرستوں کو کھلی چھٹی دیدی گئی ہے تاکہ اتحاد کا کردار ادا نہ ہوسکے، ہمیں تمام مسالک و مذاہب کے مقدسات کا احترام کرنا ہوگا اور اس پلیٹ فارم کو مزید مضبوط بنانا ہوگا۔


ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : جمعه 29 فروردین 1393 09:56 ب.ظ

دھرنوں پربیٹھے مظاہرین کو جلد گلگت کی طرف مارچ کی کال دے کروزیراعلٰی ہاوٴس اور وزیراعلٰی سیکریٹریٹ کا گھیراوٴ کیا جائے گا ، چیرمین عوامی ایکشن کمیٹی

جمعه 29 فروردین 1393 09:49 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
pakistan-gilgitprotest_4-18-2014_145018_l

گندم پرسبسڈی کے خاتمے کے خلاف گلگت بلتستان میں ہڑتال اور دھرنے چوتھے روز بھی جاری ہیں۔ عوامی ایکشن کمیٹی کا کہنا ہے کہ جلد ہی دھرنوں پر بیٹھے مظاہرین کو گلگت کی طرف مارچ کی کال دی جائے گی۔ عوامی ایکشن کمیٹی کی اپیل پر گلگت بلتستان  بھرکے اضلاع گلگت ،  ہنزہ نگر ، اسکردو ، استور، غذر اور دیامر میں دھرنوں کا آج چوتھا روز ہے۔ مظاہرین نے شاہراہ قراقرم کے گلگت سوست سیکشن پر بھی جگہ جگہ دھرنے دے کر شاہراہ بند رکھی ۔ ان کا مطالبہ ہے کہ اقوام متحدہ کی قرار داد کے مطابق گندم کی ترسیل پر دی جانے والی سبسڈی بحالی سمیت اور دیگر عوامی مطالبات پر مشتمل چارٹر آف ڈیمانڈ پر عمل در آمد کر کےکرپشن اور لوڈشیڈنگ کا فی الفور خاتمہ کیاجائے۔ گلگت کے سوا باقی تمام اضلاع میں شٹرڈاون اور پہیہ جام ہڑتال بھی کی جارہی ہے۔ اسکردو شہر میں آج چوتھے روز بھی معمولات زندگی معطل ہیں۔ یادگار شہداء پر دھرنے کے شرکا ء سے خطاب میں مقررین نے کہا کہ عوامی احتجاج کو نظر انداز کرکے جمہوری روایات کو پامال کیا جا رہا ہے۔ گلگت میں دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے ایکشن کمیٹی کے چیرمین احسان علی نے کہا کہ دھرنوں پر بیٹھے مظاہرین کو جلد گلگت کی طرف مارچ کی کال دے کر وزیراعلٰی ہاوٴس اور وزیراعلٰی سیکریٹریٹ کا گھیراوٴ کیا جائے گا۔


ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : جمعه 29 فروردین 1393 09:50 ب.ظ

قائد ملت جعفریہ کے اعلان پرحکومت بلوچستان گھٹنے ٹیکنے پرمجبور، زائرین کی 20 بسوں پرمشتمل قافلے کو باقاعدہ طور پر این او سی جاری کردی گئی ، یہ بسیں بروز منگل کوئٹہ سے بذریعہ تفتان روانہ ہوں گی

چهارشنبه 7 اسفند 1392 03:17 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
images

 

حکومت بلوچستان نے زائرین کی 20 بسوں پر مشتمل قافلے کو باقاعدہ طور پر این او سی جاری کر دی ، یہ بسیں بروز منگل کوئٹہ سے بذریعہ تفتان روانہ ہوں گی – تفصیلات کے مطابق قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے شہدا سانحہ کیرانی روڈ کوئٹہ کی برسی اور جھنگ میں ایک بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئےحکومت کو متنبہ کیا تھا کہ حکمران فوری طور پر زیارتی راستہ کھلوائیں بصورت دیگر ملت تشیع پاکستان زیارات پرجانے کیلئے خود راستہ کھولے گی – قائد ملت جعفریہ  کے اس اعلان پرجہاں انتظامیہ میں کھلبلی مچ گئی وہاں زائرین میں خوشی کی لہردوڑ اٹھی اوراس اعلان کے ساتھ  مختلف زائرین اور کاروانوں نے تیاری شروع کردی – اس طرح حکومت بلوچستان مجبورہوئی اور آج باقاعدہ طور 20 بسوں پر مشتمل زائرین کے قافلے کو این او سی جاری کر دی ۔ اطلاعات کے مطابق زائرین کی یہ بسیں کل منگل صبح مستونگ کے علاقے سے سخت سکیورٹی حصار میں ایران کی جانب روانہ ہونگی۔

واضح رہے کہ جنوری میں بلوچستان کےعلاقے مستونگ میں زائرین پر ہونے والے خودکش دھماکے کے بعد ایران جانے والی زائرین کی بسوں کیلئے زمینی راستہ مکمل طور پر بند کر دیا گیا تھا۔ جس سے  ایران جانے والے زائرین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔ جس پر قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے گذشتہ دنوں شہدا سانحہ کیرانی روڈ کوئٹہ کی برسی اور جھنگ میں اعلان کیا کہ میرے (یعنی میرے شیعہ عوام کے) لئے زیارات کا راستہ کھولا جائے ورنہ حکمران اپنے محلوں میں نہیں رہ سکیں گے جس پر حکومت بلوچستان نے باقاعدہ اعلامیہ جاری کیا کہ مستونگ کے راستے سے ایران جانے والے زائرین کیلئے زمینی راستہ کھول دیا گیا ہے اور آج بلوچستان حکومت کی جانب سے زائرین کی 20 بسوں پر مشتمل قافلے کو باقاعدہ این او سی جاری کر دی گئی ہے۔



نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : چهارشنبه 7 اسفند 1392 03:18 ب.ظ

چھ سو (600) سے زائد افراد پرمشتمل زائرین امام حسین (ع) کا قافلہ زمینی راستہ طے کرتا ہوا تفتان بارڈر پہنچ گیا

چهارشنبه 7 اسفند 1392 03:15 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
1800422_703721286346640_1045818997_n

قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی حکمت عملی سے چھ سو (600) سے زائد افراد پر مشتمل زائرین امام حسین (ع) کا قافلہ بخیر وعافیت تفتان بارڈر پہنچ گیا
واضح رہے کہ قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے گذشتہ دنوں شہدا سانحہ کیرانی روڈ کوئٹہ کی برسی اور جھنگ میں اعلان کیا کہ میرے (یعنی میرے شیعہ عوام کے) لئے زیارات کا راستہ کھولا جائے ورنہ حکمران اپنے محلوں میں نہیں رہ سکیں گے جس پر حکومت بلوچستان گھٹنے ٹیکنے پر مجبورہوئی اور باقاعدہ اعلامیہ جاری کیا کہ مستونگ کے راستے سے ایران جانے والے زائرین کیلئے زمینی راستہ کھول دیا گیا ہے اس طرح  21 جنوری کے بعد آج پہلی دفعہ زائرین کا قافلہ زمینی راستہ طے کرتا ہوا تفتان بارڈر پہنچا ہے۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : چهارشنبه 7 اسفند 1392 03:16 ب.ظ

شیعہ طلباء کی استقامت سے رکاوٹوں کے باوجود قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی گلگت میں یوم حسین (ع) کا انعقاد

چهارشنبه 20 آذر 1392 07:58 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
999238_544703252280683_2088929978_n

 

قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی گلگت میں سالہائے گزشتہ کی طرح امسال بھی رکاوٹوں اور وائس چانسلر اور جامعہ کی انتظامیہ کی جانب سے پروگرام پر پابندی کے باوجود شیعہ طلباء نے استقامت کا مظاہرہ کرتے ہوئے آج جامعہ قراقرم کے اندر ہی عظیم الشان اور پر امن یوم حسین (ع) منعقد کرکے شرپسندوں کے عزائم کو خاک میں ملا دیا۔ تصیلات کے مطابق قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی گلگت میں منعقدہ یوم حسین (ع) پروگرام میں تمام مکاتب فکر کے طلباء و طالبات نے بھر پور شرکت کی اور اس موقع پر مختلف طلباء و طالبات نے امام عالی مقام کے حضور منظوم نذرانہ عقیدت پیش کیا۔ پروگرام کا انعقاد  جے ایس او  اور آئی ایس او جامعہ قراقرم یونٹ نے مشترکہ طور پر “شیعہ اسٹوڈنٹس آف کے آئی یو” کے عنوان سے کیا۔

دوسری جانب یوم حسین (ع) کے پر امن انعقاد کی خبر سن کر مٹھی بھر شرپسند عناصر  نے ایک کالعدم دہشت گرد تنظیم کی کال پر گلگت شہر کے مختلف علاقوں میں سٹرکوں پر نکل کر احتجاج کیا اوربعض مقامات پر شاہراہیں بلاک کر دی ہیں – انتظامیہ کی جانبب سے شرپسندوں کو منشتر کرنے کیلئے اقدامات اٹھانے کی تیاریاں کی جارہی ہیں تاکہ گزشتہ سال کی طرح کوئی ناخوشگوار واقعہ پھر سے رونما نہ ہو سکے۔




نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : چهارشنبه 20 آذر 1392 07:59 ب.ظ

ملی یکجہتی کونسل کی مرکزی مجلس عاملہ کا اہم اجلاس،حکومت ملی یکجہتی کونسل کا ضابطہ اخلاق فوری طور پر نافذ کرے، مذہبی جلوس صدیوں سے جاری ہیں جن پر پابندی نہیں لگائی جاسکتی

پنجشنبه 7 آذر 1392 11:09 ب.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،
n00325265-b

 ملی یکجہتی کونسل کی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس کونسل کے صدر صاحبزادہ ڈاکٹر ابوالخیر محمد زبیر کی صدارت میں ہوا۔ اجلاس میں کونسل کے جنرل سیکرٹری لیاقت بلوچ اور قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی  نقوی سمیت دیگر اراکینِ مجلس عاملہ نے بھرپور شرکت کی۔ اجلاس میں یوم عاشور کے موقع پر پیدا ہونے والی صورتِ حال اور اس کے بعد ملک بھر میں ہونے والے واقعات کے سلسلے میں تفصیلی گفتگو ہوئی۔ تمام اراکین نے یوم عاشور پر ہونے والے پرتشدد واقعات پر افسوس کا اظہار کیا اور اسے انتظامیہ کی مکمل ناکامی قرار دیا۔

اس موقع پر کونسل کے صدر صاحبزادہ ڈاکٹر ابوالخیر محمد زبیر نے اسلامی نظریاتی کونسل کی تنظیم نو کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ عہدوں کو سیاسی رشوت کے طور پر استعمال نہ کیا جائے۔ ملک میں امن کے قیام کے لئے حکومت ملی یکجہتی کونسل کا ضابطہ اخلاق فوری طور پر نافذ کرے۔ مذہبی جلوس صدیوں سے جاری ہیں، جن پر پابندی نہیں لگائی جاسکتی۔ مذہبی جماعتیں اپنے دائرہ اختیار میں رہیں اور سیکیورٹی کے مناسب انتظامات کئے جائیں۔ صاحبزادہ ابوالخیر زبیر نے کہا کہ نظریاتی کونسل کے عہدے سیاسی رشوت کے طور پر دیئے جارہے ہیں۔ اہل افراد کا تقرر کرکے اسلامی نظریاتی کونسل کی تشکیل نو کی جائے۔ سابق پالیسیوں نے ارض وطن کو عالمی قوتوں کے لئے دلکش چراگاہ بنا دیا ہے۔




ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : پنجشنبه 7 آذر 1392 11:13 ب.ظ

کراچی میں سانحہ راولپنڈی کے خلاف شیعہ و سنی علماء کی پریس کانفرنس

جمعه 1 آذر 1392 12:18 ق.ظ

لکھا گیا ھے : پیروان ولایت
بیجها گیا: پاکستان ،

 شہدائے کربلا اور خاص طور پر امام حسین علیہ السلام امت اسلامی کے درمیان اتحاد کا ایسا مرکز و محور ہیں کہ جو بھی اسلامی مقدسات کی اس ریڈ لائن کو عبور کرتا ہے وہ خود دائرہ اسلام سے خارج ہوجاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یزیدیت کی حمایت کرنے والے یہ جان لیں کہ ہم خون کے آخری قطرے تک پاکستان میں اتحاد بین المسلمین کے خلاف ہونے والی ہر سازش کو ناکام بنائیں گے۔

 

ملی یکجہتی کونسل سندھ کے کراچی سے تعلق رکھنے والے ممتاز سنی و شیعہ علمائے کرام نے راولپنڈی میں یوم عاشور کے جلوس پر حملے کو پاکستان اور پاکستان کے مسلمانوں کے بے مثال اتحاد کے خلاف سوچی سمجھی سازش قرار دیتے ہوئے اس میں ملوث سرکردہ افراد کو سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ کراچی پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شیعہ و سنی علمائے کرام بشمول ملی یکجہتی کونسل سندھ کے قائم مقام صدر اور جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ قاضی احمد نورانی صدیقی، شیعہ علماء کونسل سندھ کے جنرل سیکریٹری علامہ ناظر عباس تقوی مجلس وحدت مسلمین سندھ کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ صادق رضا تقوی، جمعیت علمائے پاکستان کے صوبائی صدر علامہ عقیل انجم، سمیت دیگر رہنماؤں نے کہا کہ عید میلاد النبی (ص) اور عزاداری شہدائے کربلا کے خلاف شر انگیزی کرنا دہشت گردوں کی سازش ہے تاکہ شیعہ و سنی کے درمیان افتراق کی فضاء کو پیدا کیا جاسکے لیکن پاکستان کے شیعہ و سنی مسلمان اپنے مشترکہ دشمن کو پہچانتے ہیں اور ان کی سازشوں کو ناکام بنائیں گے۔




ادامه مطلب

نظرات : نظرات
آخری اپڈیٹ : جمعه 1 آذر 1392 12:19 ق.ظ



کی تعداد صفحات: 22 1 2 3 4 5 6 7 ...